مشہور گلوکارہ سندھیا مکرجی کا پدماشری ایوارڈ قبول کرنے سے انکار

سومی سین گپتا نے واضح طورپر کہا کہ پدماشری ایوارڈ قبول کرنے سے انکار سیاسی محرکات پر مبنی نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس میں کوئی سیاست کارفرما نہیں ہے۔ وہ سیاست سے بہت آگے ہیں۔

نئی دہلی: مشہور پلے بیاک سنگر سندھیا مکرجی نے یوم جمہوریہ کے موقع پر دیئے گئے پدما ایوارڈ کو قبول کرنے سے انکارکردیا۔

بنگالی انڈسٹری کی 90 سالہ بزرگ گلوکارہ اور موسیقار کو ایک سرکاری عہدیدار نے فون کرتے ہوئے پدما ایوارڈ کے لئے منتخب کئے جانے کی اطلاع دی تھی تاہم ممتاز گلوکارہ کی دختر سومی سین گپتا نے بتایا کہ ان کی والدہ نے اس اعزاز کو قبول کرنے سے انکار کردیا کیونکہ ان کے جیسی افسانوی فنکارہ کو 90 سال کی عمر میں پدماشری دینا ان کی توہین کے مترادف ہے۔

سومی سین گپتا نے واضح طورپر کہا کہ پدماشری ایوارڈ قبول کرنے سے انکار سیاسی محرکات پر مبنی نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس میں کوئی سیاست کارفرما نہیں ہے۔ وہ سیاست سے بہت آگے ہیں۔

انہوں نے اپنی توہین محسوس کی ہے اور یہی اس کی وجہ ہے۔ واضح رہے کہ سندھیا مکرجی کو 60 اور 70کے دہی کی میٹھی آوازوں میں شمار کیا جاتا ہے۔

انہوں نے بنگالی فلموں میں ہزاروں نغموں کو اپنی آواز دی ہے جبکہ دیگر زبانوں کی تقریباً 12 فلموں کے لئے بھی گیت گائے ہیں۔ ہیمنت مکرجی کے ساتھ ان کے ڈویٹ نغموں کو موسیقی کے شائقین ابھی بھی یاد کرتے ہیں۔

2011 میں سندھیا مکرجی کو حکومت ِ مغربی بنگال کا اعلیٰ ترین سیویلین اعزاز بنگہ بی بھوشن سے نوازا گیا تھا۔ انہیں 1970 میں فلم ”جئے جینتی“ کے لئے بہترین گلوکارہ کا نیشنل فلم ایوارڈ بھی عطا کیا گیا تھا۔

ذریعہ
منصف ویب ڈیسک

تبصرہ کریں

Back to top button