مصر میں سزائے موت کا فیصلہ سن کر’سیریل کلر‘ نے ’الحمد للہ‘ کہا

اس کی ویڈیو یوٹیوب سمیت دیگر سوشل میڈیا سائٹس پر وائرل ہوئی تھیں۔ قاتل عرفی نام’دبور‘ کے نام سے بھی جانا جاتا ہے مگر قتل کے واقعے کے بعد اسے ’اسماعیلیہ کا سیریل کلر‘ کا لقب دیا گیا۔

قاہرہ: مصر کی ایک فوج داری عدالت نے اسماعیلیہ شہر میں گذشتہ نومبر میں ایک نہتے شہری کو بے دردی سے قتل کرنے میں ملوث مجرم کو سزائے موت سنا دی گئی ہے۔

قتل کے اس مجرمانہ واقعہ نے اس وقت عالمی توجہ حاصل کی تھی جب مجرم عبدالرحمان نظمی نے ایک شہری کو قتل کرنے کے بعد اس کا سر تن سے جدا کیا اور کٹے ہوئے سرکو اٹھا کر اسماعیلیہ کی سڑکوں پر گھومتا اور لوگوں میں خوف پھیلاتا رہا۔

اس کی ویڈیو یوٹیوب سمیت دیگر سوشل میڈیا سائٹس پر وائرل ہوئی تھیں۔ قاتل عرفی نام’دبور‘ کے نام سے بھی جانا جاتا ہے مگر قتل کے واقعے کے بعد اسے ’اسماعیلیہ کا سیریل کلر‘ کا لقب دیا گیا۔

عدالتی فیصلے کے موقع پر مجرم کو پرسکون اور خاموش دیکھا گیا مگر بعض ذرائع ابلاغ کے مطابق مجرم نے سزا سننے کے بعد آخر میں اپنے پنجرے میں کہا: انا للہ وانا الیہ راجعون.. الحمدللہ۔

عدالت نے 9 دسمبر کے آخری سیشن میں اس کے کاغذات مصری مفتی کے پاس بھیجے تھے تاکہ اس کی پھانسی کے بارے میں قانونی رائے کا اظہار کیا جا سکے۔

دبور نے اپنی والدہ اور اہل خانہ کو ایک پیغام بھیجا، جس میں اس جرم پر اپنے پچھتاوے کا اعلان کیا گیا تھا۔

ذریعہ
منصف ویب ڈیسک

تبصرہ کریں

Back to top button