ملک کی معیشت کو نقصان پہنچارہی ہے بی جے پی : ممتا بنرجی

ممتا بنرجی نے کہا کہ مرکزی حکومت کے نزدیک کسی کی عزت نہیں ہےبلکہ اقتدار مقصود ہے اس لئے بڑی بڑی باتیں کی جارہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ میں چیلنج دیتی ہوں کہ اگلے عام انتخاب میں بی جے پی کو اکثریت نہیں ملے گی ۔

کلکتہ: مغربی بنگال کی چیف منسٹر ممتا بنرجی نے پارٹی کے سالانہ شہید دیوس پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی پورے ملک کو خراب کرنے کی کوشش کررہی ہے۔انہوں نے کہا کہ ای ڈی اور سی بی آئی کا سیاسی استعمال کیا جارہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ صدارتی انتخاب سے قبل سیاسی جماعتوں کے لیڈروں کو خوف زدہ کرنے کےلئے ان ایجنسیوںکا استعمال کیا گیا ہے۔

ممتا بنرجی نے کہا کہ مرکزی حکومت کے نزدیک کسی کی عزت نہیں ہےبلکہ اقتدار مقصود ہے اس لئے بڑی بڑی باتیں کی جارہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ میں چیلنج دیتی ہوں کہ اگلے عام انتخاب میں بی جے پی کو اکثریت نہیں ملے گی ۔انہوں نے کہا کہ اگر اپوزیشن متحد ہوجائے گی تو بی جے پی کی شکست یقینی ہے ۔

ممتابنرجی نے بنگال کے عوام سے اپیل کی ہے کہ بی جے پی کو ہرانے کےلئے متحد ہوجائیں ۔انہوں نے کہا کہ ہم بنگال میں ہی نہیں تری پورہ، میگھالیہ، اور آسام میں اپنی موجودگی درج کرانے میں کامیاب ہوگئے ہیں ۔اب ہم جے بنگلہ کے آگے جے ہند کی طرف بڑھ رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس کےلئے ترنمول کانگریس کو مثالی پارٹی بنانی ہے ۔

ممتا بنرجی نے کہا کہ کسان کی آمدنی دوگنی ہوئی ہے۔مجھے فخر ہے کہ بنگال میں 40فیصد بے روزگاری کم ہوئی ہے۔انہوں نے کہا کہ بیربھوم میں دیوپچامی کےلئے زمین کسی سے بھی زبردستی نہیں لی جائے گی ۔بنگال میں صنعت کاری کےلئے ہرممکن کوشش کروں گی ۔انہوں نے کہا کہ اگلے 100سال تک بنگال میں بجلی کی کمی نہیں ہوگی ۔ہم بجلی کی قیمت کم کرنے کو تیار ہیں ۔

ممتا بنرجی نے اساتذہ کی بحالی میں بدعنوانی پر بات کرتے ہوئے کہا کہ اساتذہ کی تقرری کولے کر عدالت میں کیس چل رہا ہے۔اس لئے ہم 17ہزار پوسٹوں پر بحال نہیں کرپارہے ہیںانہوں نے کہا کہ بنگال کی راہ روکاوٹیں کھڑی کی جارہی ہیں ۔بحالی نہیں ہونے دی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی چاہتی ہے کہ بنگال کے لوگوں کو نوکریاں نہیں ملے ۔انہوں نے کہا کہ بنگال میں نوکریاں میرٹ کی بنیاد پر نوکریاں دی جارہی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ سی پی آئی ایم کے دور اقتدار میں 10-15لاکھ روپےلے کر نوکریاں دی جاتی تھیں۔

اگر آپ چاہتے ہیں کہ میں ریل بورڈ لے جاؤں تو کوئلہ لے لو۔ سب بتاؤ یا نہیں؟ ایک طرف آپ اسے آف کرتے ہیں، دوسری طرف میں اسے آن کرتا ہوں۔ میں راستہ تلاش کرنا جانتا ہوں۔ گدر والوں کو ہر جگہ نوکریاں دی جائیں۔ جس کو نوکری ملے گی وہ اپنی میرٹ پر ملے گی۔ جب آپ کام پر جاتے ہیں تو آپ غلطی کرتے ہیں۔ CPIM کے دوران کام کیا۔ 10.15 لاکھ ملازم تھے۔

ممتا بنرجی نے کہا کہ کیا سی پی ایم کے دور میں نوکری تھی؟ میں نے بہت سے لوگوں سے سنا ہے کہ ٹیچنگ کی نوکری 10-15 لاکھ روپے میں بیچی جاتی تھی۔ سی پی ایم کے زیادہ تر ورکروں کے اہل خانہ کو نوکریاں دی جاتی ہیں ۔

ممتا بنرجی نے زراعت اور صنعت کو ایک ساتھ رکھ کر روزگار پیدا کرنے کا پیغام دیا۔تیسری بار حکومت بنانے کے بعد اب ممتا بنرجی کی حکومت کا ہدف صنعت اور روزگار ہے۔ اور انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اس کے لیے ریاست میں کیا تیاری کی جا رہی ہے۔

انہوں نے وہاں کئی منصوبوں پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے کہا کہ اس کے ذریعے روزگار پیدا ہوگا۔ممتا بنرجی نے کہا کہ دیوچا پنچمی، تاج پور پورٹ، نیو سلیکون ویلی تیار ہے اور اس کی وجہ سے بہت ساری نوکریاں تیار ہیں ۔ریاست کو اگلے 50 سال تک کوئلے کی فکر نہیں کرنی پڑے گی۔

بجلی کی قیمتیں کم ہو جائیں گی۔ اگر ترنمول کی حکومت ہے تو آپ کو بھتے، مفت راشن سب ملیں گے۔ کسی کی زمین پر زبردستی قبضہ نہیں کرنے دوں گی۔ انہوں نے کوئلہ کانکنی کے بارے میں کہا کہ بنگال میں 40 فیصد بے روزگاری کم ہوئی ہے۔ ایک طرف زراعت، دوسری طرف صنعت میرا چیلنج ہے۔ میں زبردستی زمین نہیں لوں گی۔ دیوچا پنچمی کا کام شروع ہو چکا ہے۔ بہترین کوئلہ دیوچا میں پایا جاتا ہے۔ اگر یہ ڈیوچا ہو جائے تو اگلے 100 سالوں میں بجلی کی کمی نہیں ہوگی۔ ہم بجلی کی قیمت کم کر سکتے ہیں۔

ممتا بنرجی نے کئی پروگراموں کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ پوجا کے بعد سائیکل پر سوار ہوکر گائو ں گائوں جاکر پارٹی ورکرعوام س ملاقات کریں گے۔پارٹی کے نام پر کسی سے چندہ نہ لیں۔یواین آئی۔نور

تبصرہ کریں

Back to top button