مودی حکومت، بے روزگاری دور کرنے میں ناکام : کپل سبل

کانگریس قائد کپل سبل نے آج بڑھتی بے روزگاری کا مسئلہ اٹھایا اور کہا کہ یہ مودی حکومت کے لئے محض ایک جملہ ہے۔ کپل نے اپنے ایک ٹویٹ میں کہا مودی جی نے 2019میں کہا تھا کہ ہندوستان 2022 تک 5 ٹریلین کی معیشت بن جائے گا۔

نئی دہلی۔ 20 جنوری۔(آئی این ایس) 5 ریاستوں میں انتخابات سے قبل کانگریس نے بے روزگاری اور معیشت کے موضوع پر مرکز کو نشانہ تنقید بنایا ہے۔

کانگریس قائد کپل سبل نے آج بڑھتی بے روزگاری کا مسئلہ اٹھایا اور کہا کہ یہ مودی حکومت کے لئے محض ایک جملہ ہے۔ کپل نے اپنے ایک ٹویٹ میں کہا مودی جی نے 2019میں کہا تھا کہ ہندوستان 2022 تک 5 ٹریلین کی معیشت بن جائے گا۔

ایک ٹریلین زراعت‘ ایک ٹریلین مینوفیکچرنگ۔ مودی جی نے ہر سال 2 کروڑ ملازمتیں فراہم کرنے کا وعدہ کیا تھا اور 2022 تک کسانوں کی آمدنی کو دُگنی کردینے کا بھی وعدہ کیا تھا۔

واضح رہے کہ کانگریس مودی حکومت کو نشانہ بناتی رہی ہے اور اس نے الزام عائد کیا ہے کہ 84 فیصد ہندوستانیوں کی گھریلو آمدنی گھٹ گئی ہے۔

پارٹی نے الزام عائد کیا ہے کہ مرکز کی خراب معاشی پالیسی کی وجہ سے ملک میں بے روزگاری کی شرح 7 فیصد تک پہنچ گئی ہے۔ ٹھوک افراط زر 13.56 فیصد تک پہنچ گیا ہے‘ امریکی ڈالر کے مقابل روپیہ 74 تک گرگیا ہے۔

2021 میں 84 فیصد خاندانوں کی آمدنی گھٹ گئی ہے جبکہ بعض افراد کی دولت میں 9 گنا اضافہ ہوا ہے۔ کانگریس نے مطالبہ کیا کہ کارپوریٹ ٹیکس کو 30 فیصد سے گھٹاکر 22 فیصد کیا جائے اور متوسط و کم آمدنی والے گروپس کو بھی ایسی ہی راحت دی جائے۔

پارٹی نے مطالبہ کیا کہ حکومت پٹرول اور ڈیزل کے دام 25 روپے فی لیٹر تک گھٹائے جبکہ اشیائے ضروریہ کو جی ایس ٹی سے استثنیٰ دیا جانا چاہئے یا پھر ان پر شرح ٹیکس کو معقول بنایا جانا چاہئے کیونکہ ان اشیاء پر ٹیکس کی اونچی شرحیں رجعت پسندانہ ہیں۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button