میدک میں وائی ایس شرمیلا گرفتار

ایس شرمیلا نے ضلع میدک میں بھوک ہڑتال منظم کی تھی۔ مگر پولیس نے حویلی گھن پور کے موضع بھوپتی پور کو جہاں شرمیلا بھوک ہڑتال شروع کی تھی، گھیرے میں لے لیا۔ بھوک ہڑتالی کیمپ کو پولیس برخاست کراتے ہوئے شرمیلا اور ان کے چند حامیوں کو گرفتار کرلیا۔

حیدرآباد: پولیس نے وائی ایس آر تلنگانہ پارٹی کی صدر وائی ایس شرمیلا کو گرفتار کرلیا۔ دھان کی عدم خریدی سے دلبرداشتہ خودکشی کرچکے کسانوں کے ساتھ انصاف کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے وائی ایس شرمیلا نے آج ضلع میدک میں بھوک ہڑتال منظم کی تھی۔ مگر پولیس نے حویلی گھن پور کے موضع بھوپتی پور کو جہاں شرمیلا بھوک ہڑتال شروع کی تھی، گھیرے میں لے لیا۔

بھوک ہڑتال، کے 3 سے4گھنٹے کے بعد پولیس نے زبردستی، بھوک ہڑتالی کیمپ برخاست کراتے ہوئے شرمیلا اور ان کے چند حامیوں کو گرفتار کرلیا۔ اس موقع پر احتجاجیوں اور پولیس کے درمیان ہنگامہ آرائی ہوئی جس کا سلسلہ تقریباً ایک گھنٹہ تک جاری رہا۔ آخر کار پولیس نے شرمیلا اور ان کے حامیوں کو گرفتار کرلیا۔

 اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے صدر وائی ایس آر تلنگانہ پارٹی شرمیلا نے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی زیر قیادت ٹی آر ایس حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور الزام عائد کیا کہ ریاستی حکومت کی جانب سے دھان نہ خریدنے کے سبب کسان خودکشی کرنے پر مجبور ہورہے ہیں۔

انہوں نے مہلوک کسانوں کے افراد خاندان کو فی کس ایک کروڑ روپے ایکس گریشیا دینے کا مطالبہ کیا اور کہا کہ حکومت کی ناقص زرعی پالیسیوں سے شعبہ زراعت تباہی کے قریب پہنچ چکا ہے۔

روزانہ کسان خودکشی کررہے ہیں۔ ایسے میں چیف منسٹر کے سی آر کو اقتدار پر برقرار رہنے کا کوئی حق نہیں ہے۔ انہوں نے کے سی آر سے استعفیٰ دینے کا مطالبہ کیا۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button