نواب ملک کی گرفتاری

شیوسینا۔ این سی پی اور کانگریس کے قائدین نے ملک کی گرفتاری اور ملک میں غیربی جے پی حکومتوں کو بے دخل کرنے اور ہراساں کرنے کے لیے مرکز کی جانب سے مرکزی تحقیقاتی ایجنسیوں کے بیجا استعمال کے خلاف منترالیہ کے باہر مہاتما گاندھی کے مجسمہ اور مہاراشٹرا بھر میں احتجاج کیا۔

ممبئی: ای ڈی کی جانب سے برسرخدمت کابینی وزیر نواب ملک کی گرفتاری کے ایک دن بعد حکمراں مہا وکاس اگھاڑی اور اپوزیشن بھارتیہ جنتا پارٹی نے آج ریاست بھر میں ایک دوسرے کے خلاف احتجاج کیا۔

شیوسینا۔ این سی پی اور کانگریس کے قائدین نے ملک کی گرفتاری اور ملک میں غیربی جے پی حکومتوں کو بے دخل کرنے اور ہراساں کرنے کے لیے مرکز کی جانب سے مرکزی تحقیقاتی ایجنسیوں کے بیجا استعمال کے خلاف منترالیہ کے باہر مہاتما گاندھی کے مجسمہ اور مہاراشٹرا بھر میں احتجاج کیا۔

 بی جے پی قائدین نے ممبئی، تھانے، پونے، ناگپور، اورنگ آباد اور دیگر شہروں میں مظاہرے کرتے ہوئے ملک پر ”مافیا سے روابط“ کا الزام عائد کیا اور ان کے کابینہ سے استعفیٰ یا انہیں فوری برطرف کرنے کا مطالبہ کیا۔ ڈپٹی چیف منسٹر اجیت پوار، وزراء سبھاش دیسائی، جینت پاٹل، چھگن بھوجبل، حسن مشرف، بالا صاحب تھوراٹ، اشوک چوان، سنیل کیدار، وجئے وڈیتیوار اور دیگر پارٹی قائدین نے کئی کارکنوں کے ساتھ دھرنیا دیا۔ 

انہوں نے تحقیقاتی ایجنسیوں کے بیجا استعمال کے ذریعہ سیاسی انتقام لینے اور بہرقیمت حصول اقتدار کے لیے قائدین کو توڑنے یا جھکانے کے لیے ہراساں کرنے پر مرکزی حکومت کے خلاف نعرے بازی کی۔ بی جے پی کے شہری، ریاستی اور علاقائی قائدین نے ریلوے اسٹیشنوں، بس اسٹیشنوں یا دیگر عوامی مقامات پر پُرشور مظاہرے کیے اور ملک پر مفرور مافیا ڈان داوؤد ابراھیم کاسکر اور اس کے خاندان کے ذریعہ ”دہشت گرد کارروائیوں کو مالیہ کی فراہمی“ کا الزام عائد کیا۔

مہاراشٹرا پولیس نے حکومت اور اپوزیشن کے تمام احتجاجی مقامات پر سخت سیکورٹی کا بندوست کیا، کیوں کہ ایم وی اے اپنے سب سے بڑے سیاسی بحران سے گزررہی ہے۔ ایک بے نظیر اقدام میں ای ڈی نے چہارشنبہ کو ملک کو ان کے گھر سے اٹھالیا، اپنے دفتر لے گئی اور انہیں سمن حوالے کیے اور 8گھنٹوں کی پوچھ تاچھ کے بعد انہیں مبینہ حوالہ کے الزامات کے تحت گرفتار کرلیا تھا۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button