نکہت زرین‘ سیمی فائنل میں داخل

برمنگھم میں جاری کامن ویلتھ گیمز میں ہندوستانی کھلاڑی اپنی صلاحیتوں کے مطابق شاندار مظاہرہ کررہے ہیں۔ ہندوستان پہلے ہی بہت سارے تمغے جیت چکاہے لیکن حال ہی میں اس فہرست میں ایک اور تمغے کا اضافہ ہوا ہے۔

برمنگھم: برمنگھم میں جاری کامن ویلتھ گیمز میں ہندوستانی کھلاڑی اپنی صلاحیتوں کے مطابق شاندار مظاہرہ کررہے ہیں۔ ہندوستان پہلے ہی بہت سارے تمغے جیت چکاہے لیکن حال ہی میں اس فہرست میں ایک اور تمغے کا اضافہ ہوا ہے۔

تلنگانہ سے تعلق رکھنے والی خاتون باکسر نکہت زرین نے جمعرات کو 50 کلوگرام زمرہ کا کوارٹر فائنل میچ جیت لیا۔ نکہت جنہوں نے حال ہی میں ورلڈ باکسنگ چمپئن شپ میں گولڈ میڈل جیتا تھا‘ کامن ویلتھ گیمز میں بھی اپنی طاقت دکھا رہی ہیں۔

زرین جو پہلے ہی بیک ٹو بیک میچ جیت چکی ہیں اور کوارٹر فائنل میں پہنچ چکی ہیں، اس میچ میں ویلز کی ہیلن جونز کو شکست دی۔ اس کامیابی کے ساتھ ہی جہاں نکہت زرین سیمی فائنل میں داخل ہوگئی ہیں وہیں ان کیلئے میڈل بھی یقینی ہوگیاہے۔

اس کے علاوہ امیت پنگھل باکسنگ کے 48 کلوگرام وزن کے زمرے میں سیمی فائنل میں پہنچ گئے۔ ہما داس نے 200 میٹر کے سیمی فائنل میں بھی جگہ بنالی ہے جبکہ بیاڈمنٹن میں ہندوستان کے کڈمبی سری کانت مردوں کے سنگلز میں پری کوارٹر میں پہنچ گئے۔

خواتین کے ڈبلز راؤنڈ میں سنائینا سارہ کورویلا اور اناہتا سنگھ نے سری لنکا کی کروپا یہینی اور سینالے چنیتھما کو 11-9 اور 11-4 سے شکست دی۔ اس جیت کے ساتھ ہی سنینا سارہ کورویلا اور اناہتا سنگھ نے راؤنڈ 16 میں جگہ بنالی۔ اسی دوران ہندوستان کو اسکواش میں ایک برانز میڈل حاصل ہوا۔

مردوں کے سنگلز کے برانز میڈل مقابلے میں سورو گھوشال نے انگلینڈ کے جیمز ولسٹراپ کو سیدھے سیٹوں میں شکست دیکر برانز میڈل جیتا۔ اس میچ میں سورو شروع سے ہی میزبان انگلینڈ کے کھلاڑی پر حاوی رہے اور انہوں نے اسے تیسرے گیم تک اس کو برقرار رکھا۔ سورو، جیمز کے والد میلکم سے کوچنگ لے چکے ہیں۔

اس میچ سے پہلے تک جیمز کا سورو کے خلاف ریکارڈ دمدار تھا۔ وہ ہندوستانی کھلاڑی کے خلاف 8 میچ جیتے تھے۔ لیکن گھوشال برانز میڈل کے مقابلے میں بھاری پڑ گئے۔ جیمز نے پچھلے کامن ویلتھ گیمز میں گولڈ میڈل جیتا تھا۔ سورو نے اس جیت کے ساتھ تاریخ رقم کردی ہے۔

وہ کامن ویلتھ گیمز میں اسکواش کے سنگلز ایونٹ میں میڈل جیتنے والے پہلے ہندوستانی بن گئے ہیں۔ دریں اثناء تیجسون شنکر نے مردوں کے ہائی جمپ مقابلے میں تاریخی کانسے کا تمغہ جیتا۔ ایکسلنڈر اسٹیڈیم شنکر نے2.22 میٹر کے ساتھ اپنا بہترین مظاہرہ کیا۔

انہوں نے کامن ویلتھ گیمز میں ہائی جمپ ایونٹ میں ہندوستان کو پہلا تمغہ دلایا۔ بہاماس کے سابق عالمی اور دولت مشترکہ کھیلوں کے چمپئن ڈونالڈ تھامس نے شنکر کے ساتھ2.22میٹر اونچی چھلانگ لگائی، لیکن ہندوستانی نے کانسے کا تمغہ حاصل کیا کیونکہ انہوں نے اپنی تمام کود میں 2.10 میٹر،2.15 میٹر، 2.19 میٹر اور 2.22 میٹرکو پہلی ہی کوشش میں اس رکاوٹ کو پار کرلیا۔

کانسے کا تمغہ جیتنے کے بعد شنکر نے کہا کہ میرے پاس کالج کے سیزن کابھی تجربہ تھا اور میں نے جنوری میں کودنا شروع کردیا تھا لیکن یہاں کانسے کا تمغہ حاصل کرنا ایک خواب پورا ہونے جیساہے اور میں اپنے ساتھ کچھ گھر لے جارہا ہوں اور خوش ہوں۔

وزیراعظم نریندر مودی نے شنکر کو مردوں کے ہائی جمپ مقابلے میں ہندوستان کا پہلا اتھلیٹکس میڈل جیتنے پر مبارکباد دی۔ مودی نے ٹویٹ کیاکہ تیجسون شنکر نے تاریخ رقم کی، انہوں نے کامن ویلتھ گیمز میں ہائی جمپ کا پہلا تمغہ جیتا۔

کانسے کا تمغہ جیتنے پر انہیں مبارکباد۔ ان کی کاوشوں پر فخر ہے۔ ان کی مستقبل کی کوششوں کیلئے نیک خواہشات۔ وہ کامیابی حاصل کرتے رہیں۔

اس ایونٹ میں ورلڈ انڈور چمپئن شپ کے کانسے کا تمغہ جیتنے والے نیوزی لینڈ کے ہامیش کیر نے2.25 میٹر کی چھلانگ لگاکر گولڈ میڈل جیتا جبکہ آسٹریلیا کے برینڈن اسٹارک نے سلور میڈل حاصل کیا۔ہندوستان کو جایہر کامن ویلتھ گیمز میں ابھی تک 5 گولڈ میڈلس حاصل ہوچکے ہیں۔

تبصرہ کریں

Back to top button