نیتاجی کی جھانکی مستردکرکے مرکز نے بنگال سے ناانصافی کی: ممتا بنرجی

ممتا بنرجی نے کہا کہ آپ صرف ایک مجسمہ لگا کر نیتاجی سے محبت نہیں جتاسکتے۔ آپ نے نیتاجی کے لاپتہ ہونے کا معمہ حل کرنے کیلئے کیا کیا؟ مرکزی حکومت نے وعدہ کیاتھا کہ وہ سارے راز بے نقاب کرے گی لیکن اس میں وہ ناکام رہی۔

کولکتہ: بی جے پی پر تنقید تیزکرتے ہوئے چیف منسٹر مغربی بنگال ممتابنرجی نے اتوار کے دن کہا کہ ’انڈیا گیٹ پر نیتاجی سبھاش چندربوس کا مجسمہ نصب کرنے کا وعدہ کرنے والی نریندرمودی حکومت یوم جمہوریہ کے موقع پر مغربی بنگال کی جھانکی مسترد کرتے ہوئے ریاست سے ناانصافی کی تردید نہیں کرسکتی۔ انہوں نے کہا کہ مغربی بنگال کی جھانکی مسترد کرنے کی کوئی وجہ نہیں بتائی گئی۔ ٹی ایم سی سربراہ نے کہا کہ ہم کولکتہ کی ریڈ روڈ پر یوم جمہوریہ پریڈ میں یہ جھانکی نکالیں گے۔

لوگ دیکھیں گے کہ یہ کتنی شاندار جھانکی ہے جس میں نیتاجی سبھاش چندربوس کی بہادری اور ہمارے ملک کی آزادی کی پلاٹینم جوبلی کو اجاگر کیاگیا ہے۔ مرکز یہ نہیں کہہ سکتا کہ اس نے جھانکی مسترد کرکے بنگال سے ناانصافی نہیں کی۔ مرکز کو نشانہ بناتے ہوئے ٹی ایم سی سربراہ نے کہا کہ بی جے پی زیرقیادت مرکزی حکومت نیتاجی کے لاپتہ ہونے کا معمہ حل کرنے کا اپنا وعدہ وفانہیں کرسکی۔

چیف منسٹر نے کہا کہ آپ صرف ایک مجسمہ لگا کر نیتاجی سے محبت نہیں جتاسکتے۔ آپ نے نیتاجی کے لاپتہ ہونے کا معمہ حل کرنے کیلئے کیا کیا؟ مرکزی حکومت نے وعدہ کیاتھا کہ وہ سارے راز بے نقاب کرے گی لیکن اس میں وہ ناکام رہی۔ ممتابنرجی نے کہا کہ ان کی حکومت نے نیتاجی سے متعلق تمام فائلیں ڈیجیٹائزکردیں تاکہ یہ پبلک ڈومین میں دستیاب رہیں۔

 ممتابنرجی نے امرجوان جیوتی اور نیشنل وار میموریل کی مشعل کو ضم کردینے کے مرکز کے اقدام پربھی تنقید کی۔ انہوں نے کہا کہ امرجوان جیوتی بجھا کر آپ اپنے گناہ کا کفارہ نہیں کرسکتے۔ یادگاروں اور مجسموں پر راج نیتی بند کردیں۔ چیف منسٹر مغربی بنگال نے پلاننگ کمیشن(منصوبہ بندی کمیشن) تحلیل کردینے کیلئے بھی مودی حکومت کو نشانہ تنقید بنایا۔

 انہوں نے کہا کہ ان کی حکومت بنگال پلاننگ کمیشن قائم کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ وفاقیت کا بنیادی تصور نیتاجی، رشی اروبندو اوروویکانند جیسی قدآورشخصیتوں کی طرف سے آیا۔ بی جے پی ملک کی وفاقی روح کو تباہ کرنے پر تلی ہے۔ اس کے تمام اقدامات سے یہ بات جگ ظاہر ہے۔ وہ بنگال سے آئی اے ایس عہدیداروں کو دہلی طلب کرتی ہے۔ وہ سابق میں ہمارے چیف سکریٹری کو بھی طلب کرچکی ہے۔ کسی پارٹی کا نام لئے بغیر چیف منسٹر نے کہا کہ ملک کی تاریخ کو تبدیل اور مسخ کرنے کی کوششوں کی مزاحمت کی جانی چاہئیے۔

انہوں نے کہا کہ ایسی کوششیں کرنے والوں سے پوچھنا چاہئیے کہ آیا انہوں نے نیتاجی کو پڑھا ہے؟ ان کی تقاریر سنی ہیں؟۔ یاد رہے آزاد ہند فوج میں نیتاجی کا بااعتماد رفیق ایک مسلمان تھا۔ پھوٹ اور نفرت کے نظریہ کے حامیوں کو گاندھی جی‘ نیتاجی اور بی آرامبیڈکر سے سیکھناچاہئیے۔ ممتابنرجی نے زوردے کرکہا کہ جدوجہد آزادی میں بنگال کی درخشاں تاریخ پڑھائی جانی چاہئیے۔

 انہوں نے کہا کہ ہندوستان کا قومی ترانہ رابندرناتھ ٹیگور اور قومی گیت بنکم چندرچٹوپادھیائے نے لکھا جبکہ جئے ہند کا نعرہ نیتاجی سبھاش بابو نے دیاتھا۔ تحریک آزادی میں بنگال اور پنجاب کا کافی یوگ دان ہے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button