وادی میں رمضان کے پہلے جمعہ کے رو ح پرور اجتماعات

ماہ مبارک رمضان کے پہلے جمعہ کے موقع پر وادی کشمیر کے تمام جامع مسجد اور امام بارگاہوں میں نماز جمعہ کے انتہائی روح پرور اجتماعات منعقد ہوئے۔

سری نگر: ماہ مبارک رمضان کے پہلے جمعہ کے موقع پر وادی کشمیر کے تمام جامع مسجد اور امام بارگاہوں میں نماز جمعہ کے انتہائی روح پرور اجتماعات منعقد ہوئے۔

سب سے بڑے اجتماعات تاریخی جامع مسجد سری نگر اور درگاہ حضرت بل میں منعقد ہوئے جہاں ہزاروں کی تعداد میں فرزندان توحید نے نماز جمعہ باجماعت ادا کی۔

تاریخی جامع مسجد نوہٹہ میں کسی بھی ناخوشگوار واقعے کو ٹالنے کی خاطر گلی کوچوں میں سیکورٹی فورسز کی تعیناتی عمل میں لائی گئی تھی۔یو این آئی اردو کے نامہ نگار نے بتایا کہ رمضان المبارک کے پہلے جمعہ کے موقع پر وادی کشمیر کے اطراف واکناف میں روح پرور اجتماعات منعقد ہوئے، سب سے بڑی تقریب تاریخی جامع مسجد نوہٹہ سری نگر اور درگاہ حضرت بل میں منعقد ہوئی۔

انہوں نے بتایا کہ جھیل ڈل کے کناروں پر واقع آثار شریف درگاہ حضرت بل میں لوگوں کی بھاری تعداد نے نماز جمعہ میں شرکت کی جس میں مرد و زن، بچے اور بوڑھے شامل تھے۔

اس موقع پر وادی کشمیر میں امن و امان کی خاطر خصوصی دعاؤں کا بھی اہتمام ہوا۔ انتظامیہ نے آثار شریف درگاہ حضرت بل میں زائرین کو ہر ممکن سہولیت پہنچانے کی غرض سے تمام انتظامات کئے تھے جن میں ٹرانسپورٹ، صحت وصفائی کے علاوہ دیگر سہولیات شامل ہیں۔

دریں اثنا سری نگر کے نوہٹہ علاقے میں واقع وادی کشمیر کی قدیم ترین اور تاریخی جامع مسجد میں بھی رمضان المبارک کے پہلے جمعہ پر لوگوں کی بھاری تعداد نے نماز ادا کی۔نامہ نگار نے بتایا کہ جامع مسجد میں لوگوں کی تعداد کا اس بات سے بخوبی اندازہ لگایا جاسکتا تھا کہ مسجد کے احاطے میں تل دھرنے کی بھی جگہ موجود نہیں تھی۔انہوں نے کہا کہ نمازیوں کے چہروں پر خوشی و شادمانی کے آثار نمایاں تھے اور وہ ایک دوسرے کا گرمجوشی کے ساتھ استقبال کرتے تھے۔

انجمن اوقاف جامع کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ میر واعظ مولوی عمر فاروق کی خانہ نظر بندی کے باعث خطبہ جمعہ دینے کے فرائض امام حی سید احمد نقشبندی نے انجام دئے۔انہوں نے کہا کہ جامع میں نماز جمعہ کی ادائیگی کے لئے تمام تر انتظامات کو عملی جامہ پہنایا گیا تھا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ وادی کے گوشہ وکنار سے کافی بڑی تعداد میں لوگ یہاں نماز جمعہ ادا کرنے کے لئے آئے ہوئے تھے۔

دریں اثنا حکام نے جامع کے گرد و پیش میں سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے تھے تاکہ کسی بھی ناخوشگوار واقعے کی روک تھام کو یقینی بنایا جاسکے۔حکام نے حساس علاقوں میں سیکورٹی فورسز کی اضافی نفری کو تعینات کیا تھا۔علاوہ ازیں وادی کے باقی اضلاع میں بھی نماز جمعہ کے موقع پر روح پرور مجالس کا اہتمام ہوا۔

چرار شریف میں واقع آستانہ عالیہ حضرت علمدار کشمیر شیخ نور الدین نورانی ؒ میں بھی نماز جمعہ کے موقع پر بڑا اجتماع منعقد ہوا۔ بڈگام سے یو این آئی اردو کے نامہ نگار نے بتایا کہ وادی کے اطرا ف و اکناف سے آئے ہوئے لوگوں نے درگاہ اویسہ میں نماز جمعہ باجماعت ادا کی۔

تبصرہ کریں

Back to top button