وراٹ کیلئے کپتانی چھوڑنا نعمت ثابت ہوسکتا ہے: روی شاستری

ہندوستان کے سابق کوچ روی شاستری نے کہا کہ کپتانی چھوڑنے سے وراٹ کوہلی اب زیادہ کھل کر کھیلنا شروع کرسکتے ہیں اور یہ اس شاندار بیاٹنگ اسٹار کے لیے نعمت ثابت ہوسکتا ہے۔

نئی دہلی: ہندوستان کے سابق کوچ روی شاستری نے کہا کہ کپتانی چھوڑنے سے وراٹ کوہلی اب زیادہ کھل کر کھیلنا شروع کرسکتے ہیں اور یہ اس شاندار بیاٹنگ اسٹار کے لیے نعمت ثابت ہوسکتا ہے۔

ٹیم کے چیف کوچ کی حیثیت سے اپنی میعاد کے دوران کوہلی کے ساتھ مل کر کام کرنے والے شاستری کے مطابق کپتانی چھوڑنا ایک دانشمندانہ فیصلہ تھا حالانکہ ان کا ماننا ہے کہ کوہلی کو ہندوستان کا ٹیسٹ کپتان برقرار رہنا چاہیے تھا۔

شاستری نے کہا کہ ایمانداری سے کہوں تو مجھے لگتا ہے کہ یہ (کپتانی چھوڑنا) آشیرواد ہوسکتا ہے۔ اس کے کندھوں سے کپتانی کا دباؤ، کپتان ہونے کے ساتھ آنے والی امیدیں اب نہیں ہیں۔

وہ باہر جاسکتا ہے خود کو ظاہر کرسکتا ہے آزادانہ طور پر کھیل سکتا ہے او رمجھے لگتا ہے کہ وہ ایسا ہی کرنا چاہیں گے۔ سابق ہندوستانی کوچ نے کہا کہ مجھے لگتا ہے کہ سب سے اہم بات یہ ہے کہ اپنے مظاہرہ کے بارے میں فکر نہ کریں کیو ں کہ اس کے عالمی کرکٹ میں لوگوں کو یہ جاننے کے لیے کافی ہے کہ وہ کہاں کھڑا ہے۔

یہ اس کے بارے میں ہے اور وہ وہاں خود کا لطف لینا چاہتا ہے۔ مجھے لگتا ہے کہ یہی اہم ہے۔ یہ اپنے آپ سے کہنے کا معاملہ ہے۔ میں وہاں جانا چاہتا ہوں خود کو ظاہر کرنا چاہتا ہوں اور خود کا لطف لینا چاہتا ہوں۔“

قبل ازیں شاستری نے کہا تھا کہ آئی پی ایل 2022 کئی کھلاڑیوں کے لیے ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے مستقبل کے کپتان کے طور پر خود کو تلاش کرنے کا موقع ہے۔

شاستری نے حالانکہ ہندوستانی کپتان روہت شرما کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ وہ کافی اچھا کام کررہے ہیں لیکن ہندوستان یہ دیکھ رہا ہے کہ مستقبل میں ٹیم کی کپتانی کون کرے گا۔

انہو ں نے کہا کہ وراٹ نے پہلے ہی اپنی نوکری چھوڑدی ہے۔ روہت سفید گیند والے کرکٹ میں ایک اعلیٰ درجے کے کپتان ہیں۔ لیکن مجھے لگتا ہے یہ آئی پی ایل ہندوستان دیکھ رہا ہوگا کہ ٹیم (مستقبل میں) کی کپتانی کون کرے گا۔ شریئس ایئر، رشبھ پنت، کے ایل راہول ہیں۔

تبصرہ کریں

Back to top button