ویراٹ کوہلی کے 100ویں ٹسٹ میاچ میں ہندوستان جیت کیلئے کھیلے گا

ویراٹ کیلئے اس لمحہ کو یادگار بنانے کے لیے پی سی اے نے خصوصی انتظامات کیے ہیں۔ پی سی اے نے چنڈی گڑھ کے مختلف مقامات پر کوہلی کو مبارکباد دینے والے بڑے بڑے بورڈ لگائے ہیں۔

موہالی: ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان ویراٹ کوہلی کے جمعہ کو یہاں 100ویں ٹیسٹ میچ میں ہندوستانی کرکٹ ٹیم جیت کے لیے کھیلے گی۔ ویراٹ نے اپنے اب تک کے شاندار کرکٹ کیریئر میں کئی سنگ میل حاصل کیے ہیں اور وہ جمعہ کو موہالی کے پنجاب کرکٹ ایسوسی ایشن (پی سی اے) اسٹیڈیم میں اپنے آپ کو پروقار سطح پر پائیں گے، جب وہ 100 ٹسٹ میچ کھیلنے والے ہندوستان کے 12ویں اور دنیا کے 71ویں کھلاڑی بن جائیں گے۔ ان سے پہلے سچن ٹیندولکر، راہول دراوڈ، وی وی ایس لکشمن، انیل کمبلے، کپل دیو، سنیل گواسکر، دلیپ وینگسرکر، سورو گنگولی، ایشانت شرما، ہربھجن سنگھ اور وریندر سہواگ 100 سے زیادہ ٹیسٹ میچ کھیل چکے ہیں۔

یہ یقینی طور پر ایک آل فارمیٹ کرکٹر کے لیے ایک اہم حصولیابی ہے اور خاص طور پر تب، جب اس کا پورا کیریئر ٹی20 کے دور میں چلاہو۔ سنیل گواسکر، سچن ٹیندولکر یا یہاں تک کہ راہل دراوڈ جیسے دیگر ہندوستانی بلے بازوں کے برعکس ویراٹ کا ہندوستان کی ٹیسٹ ٹیم میں اپنی جگہ پکی کرنے کا راستہ انتہائی شانداررہا ہے۔

ویراٹ کے لیے اس لمحے کو یادگار بنانے کے لیے پی سی اے نے خصوصی انتظامات کیے ہیں۔ پی سی اے نے چنڈی گڑھ کے مختلف مقامات پر کوہلی کو مبارکباد دینے والے بڑے بڑے بورڈ لگائے ہیں۔ اس کے علاوہ آئی ایس بندرا کرکٹ اسٹیڈیم میں بھی کوہلی کو مبارکباد کے پیغامات والے بینرز لگائے گئے ہیں۔ یہ بھی سمجھا جاتا ہے کہ پی سی اے کی جانب سے ویراٹ کا ہوٹل سے اسٹیڈیم تک استقبال کیا جائے گا۔ ساتھ ہی ساتھ پی سی اے کی جانب سے ویراٹ کو ایک سلور شیلڈ بھی بطور یادگار پیش کی جائے گی۔

قابل ذکر ہے کہ 2008 میں ون ڈے میں ڈیبیو کرنے کے بعد، ویراٹ کو پہلا ٹیسٹ میچ کھیلنے کا موقع تقریباً تین سال بعد کیریبین میں ملا، جب کرکٹ لیجنڈ سچن ٹیندولکر نے اس دورے کو چھوڑنے کا انتخاب کیا۔ تب تک، کوہلی نے 50 اوور کے فارمیٹ میں خود کو ٹیم کے سرکردہ بلے باز کے طور پر قائم کر لیا تھا، حالانکہ انہیں ریڈ بال ٹیم میں کوئی کامیابی نہیں مل رہی تھی۔

 ٹیسٹ فارمیٹ میں ان کا آغاز اچھا نہیں تھا اورانہیں اپنی پہلی سیریز میں مایوس کن کارکردگی کے بعد ڈراپ کر دیا گیا تھا، لیکن وہ سال کے آخر میں شاندارکارکردگی کی بدولت بیرون ملک دورے میں ٹیم کا حصہ بنے، جہاں وہ 300 رنزکے اعدادوشمار کوپارکرنے والے واحد مہمان بلے باز بنے۔

ہندوستانی ٹیم کی بات کریں تو تقریباً تمام کھلاڑی فٹ نظر آرہے ہیں۔ حال ہی میں ٹیم کے نائب کپتان جسپریت نے بھی ورچوئل پریس کانفرنس میں تمام کھلاڑیوں کے پہلے ٹیسٹ میچ کے لیے فٹ اور دستیاب ہونے کی بات کہی تھی۔ ہندوستانی ٹیم پچھلی تین سیریز لگاتار جیت کرآرہی ہے۔ ایسے میں اس کا اعتماد کافی بڑھا ہوا ہے، جس کا اثر کارکردگی پر نظر آئے گا۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button