ویڈیو: فلسطینی طالبہ کا تقریبِ تقسیم اسناد میں امریکی وزیر خارجہ سے ہاتھ ملانے سے انکار

امریکہ کی ایک یونیورسٹی کی تقریب تقسیم اسناد میں فلسطینی طلبا نے اپنے ملک کا پرچم لہرا کر احتجاج کیا جب کہ ایک طالبہ نے وزیر خارجہ انٹونی بلنکن سے مصافحہ کرنے سے انکار کردیا۔

واشنگٹن ڈی سی: امریکہ کی ایک یونیورسٹی کی تقریب تقسیم اسناد میں فلسطینی طلبا نے اپنے ملک کا پرچم لہرا کر احتجاج کیا جب کہ ایک طالبہ نے وزیر خارجہ انٹونی بلنکن سے مصافحہ کرنے سے انکار کردیا۔

عالمی خبر رساں ادارہ کے مطابق واشنگٹن ڈی سی کی جارج ٹاؤن یونیورسٹی میں گریجویشن تقریب منعقد کی گئی۔ تقریب کے مہمان خصوصی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن تھے جو اسٹیج پر کامیاب طلبا سے ہاتھ ملا رہے تھے اور مبارک باد دے رہے تھے۔

اسناد لینے والوں میں فلسطینی طلبا بھی شامل تھے جنھوں نے اپنے ملک میں اسرائیلی مظالم کے خلاف کے احتجاج کے لیے انوکھا طریقہ اپنایا۔ تقریباً 6 فلسطینی طلبا اپنا قومی پرچم ساتھ لائے تھے اور اسے ڈگری لیتے ہوئے لہرایا۔

اسی طرح ایک فلسطینی طلبہ نوران الحمدان اپنا قومی پرچم لہراتی اسٹیج پر آئیں اور ڈگری وصول کی، اسٹیج پر موجود افراد سے تو مصافحہ کیا لیکن جب امریکی وزیر خارجہ سے ملنے کی باری آئی تو طالبہ نے ہاتھ نہ ملایا اور کچھ سناتی ہوئی آگے بڑھ گئیں۔

یونیورسٹی طلبا نے اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے ہلاک ہونے والی خاتون صحافی شیریں عاقلہ کی تصاویر بھی اْٹھا رکھی تھیں۔

تبصرہ کریں

Back to top button