حیدرآباد

ٹمریز اسکول گوشہ محل، طلبہ کو عبادتوں سے روکنے کی شکایت

تلنگانہ کا شمار ملک کی سب سے بہترین سیکولر نظریات پر عمل کرنے والی ریاست کے طور پر کیا جاتا ہے۔یہاں کی گنگا جمنی تہذیب ملک کیلئے مثالی ہے۔

حیدرآباد: تلنگانہ کا شمار ملک کی سب سے بہترین سیکولر نظریات پر عمل کرنے والی ریاست کے طور پر کیا جاتا ہے۔یہاں کی گنگا جمنی تہذیب ملک کیلئے مثالی ہے۔

حکومت کی جانب سے بھی اس گنگا جمنی روایات کو برقرار رکھنے کے لئے کوئی کسر باقی رکھی نہیں جا رہی ہے،مگر ملک کے دیگر علاقوں کی طرح یہاں بھی چند پراگندہ ذہن کے حامل افراد موجود ہیں جو اپنی کوتاہ ذہنیت کے ذریہ سماج میں نفرت کے بیج بونا چاہتے ہیں۔

ایسا ہی ایک واقعہ گوشہ محل میں واقع ٹمریز اسکول میں پیش آیا جہاں کی پرنسپل مبینہ طورپر اقلیتی طلبہ کے ساتھ نازیبا برتاؤ کررہی ہیں۔ان طلبہ کو عبادت کرنے سے روک رہی ہیں۔

جب اولیائے طلبہ کی جانب سے اس سلسلہ میں پرنسپل سے بات کرنے کی کوشش کی گی تو انہوں نے انتہائی اہانت آمیز رویہ اختیار کرتے ہوئے طلبہ کو ٹی سی دینے کی دھمکی دی۔ طلبہ کے والدین کے ساتھ غلط رویہ اختیار کیا تلخ لہجہ میں بات کی۔

اس کا ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگیا ہے۔اولیائے طلبہ نے ارباب مجاز سے اس ضمن میں تحقیقات عمل میں لاتے ہوئے پرنسپل کے خلاف ضروری کاروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے تاکہ مستقبل میں اس طرح کے واقعات کو رونما ہونے سے روکا جا سکے اور حکومت کی نیک نامی برقرار رہے۔

a3w
a3w