ٹی آر ایس ایم ایل سی کے خلاف کیس درج۔انسپکٹر کو دھمکانے اور بدسلوکی کا الزام

ضلع وقار آباد میں پولیس نے حکمراں جماعت ٹی آر ایس کے ایک ایم ایل سی کے خلاف کیس درج کرلیا ہے۔ا ن پر ایک پولیس عہدیدارکے ساتھ بدسلوکی کرنے اور دھمکی دینے کا الزام ہے۔

حیدرآباد: ضلع وقار آباد میں پولیس نے حکمراں جماعت ٹی آر ایس کے ایک ایم ایل سی کے خلاف کیس درج کرلیا ہے۔ا ن پر ایک پولیس عہدیدارکے ساتھ بدسلوکی کرنے اور دھمکی دینے کا الزام ہے۔

سرکل انسپکٹر راجندر ریڈی کی شکایت پر سابق وزیر وایم ایل سی پی مہندر ریڈی کے خلاف تانڈور پولیس اسٹیشن میں ایک کیس درج کرلیا گیا ہے۔ راجندر ریڈی نے الزام عائد کیا کہ رکن مقننہ نے انہیں سرکاری فرائض کی ادائیگی سے روکنے کی کوشش کی اور انہیں دھمکی دینے کے ساتھ ان کے ساتھ غلط برتاؤ کیا ہے۔

ضلع ایس پی وقار آباد این کو ٹی ریڈی نے کہا کہ مہندر ریڈی کے خلاف کیس درج کرلیا گیا ہے۔ ٹی آر ایس قائد کے خلاف آئی پی سی کی دفعات 353، 504 اور 506 کے تحت کیس درج کرلیا گیا ہے۔

ٹیلی فون بات چیت کے ایک ویڈیو کلپ کے وائرل ہونے کے بعد کیس درج کیا گیا ہے جس میں مہندر ریڈی کو تانڈور ٹاؤن کے انسپکٹر راجندر ریڈی کے ساتھ بدسلوکی کرتے ہوئے سنا گیا ہے۔

ایم ایل سی کو حالیہ دنوں مندر کی ایک تقریب میں، ایک روڈی شیٹر کی شرکت پر سرکل انسپکٹر سے سوال کرتے ہوئے سنا گیا۔ وہ عہدیدار کی وضاحت پر مطمئن نہیں ہوئے۔ رکن مقننہ نے عہدیدار کو ان کے کال ریکارڈنگ کا چیلنج کیا اور کہا کہ ریکارڈنگ سے ان پر کوئی اثر ہونے والا نہیں ہے۔

کالر نے انسپکٹر کو سنگین نتائج وعواقب کی دھمکی دی اور کہا کہ وہ ان کا دوسرے مقام پر تبادلہ بھی کراسکتے ہیں۔ انہوں نے انسپکٹر پر الزام عائد کیا کہ وہ ریت کی غیر مجاز نکاسی اسکام میں ملوث ہیں اور وہ انہیں رنگے ہاتھوں گرفتار کرائیں گے۔ دریں اثنا رکن قانون ساز کونسل مہندر ریڈی نے انسپکٹر کی بدسلوکی کرنے اور انہیں دھمکانے کی تردید کی۔

آج یہاں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ویڈیو کلپ میں جو آواز ہے وہ ان کی نہیں ہے۔ چند افراد، میری امیج کو خراب کرنے کی سازش کررہے ہیں۔ پولیس کیس کے اندراج پر انہوں نے کہا کہ وہ اس سلسلہ میں عدالت سے رجوع ہوں گے۔

تبصرہ کریں

Back to top button