ٹی آر ایس تیسری بار اپنے بل بوتے پر حکومت بنائے گی؟: پرشانت کشور

پرشانت کشور نے سروے کرواتے ہوئے ایک مفصل اور جامع رپورٹ کے چندر شیکھر راو کے حوالہ کردی ہے۔ سروے رپورٹ کے مطابق اگر ریاست میں فوری انتخابات منعقد کرائے جاتے ہیں تو ٹی آر ایس کی کامیابی طئے ہے۔

حیدرآباد: مشہور سیاسی حکمت عملی ساز پرشانت کشور کی جانب سے کرائے گئے ایک اور سروے کے مطابق تلنگانہ میں ٹی آر ایس کو مسلسل تیسری بار کامیابی حاصل ہونا تقریباً طئے ہے۔ واضح رہے کہ ٹی آر ایس سربراہ کے چندر شیکھر راؤ کی جانب سے حکومت اور ارکان اسمبلی کی کارکردگی اور آئندہ انتخابات میں پارٹی کے موقف کے متعلق سروئے کراتے ہوئے تجاویز پیش کرنے کے لئے پرشانت کشور کی خدمات حاصل کی ہیں۔

 پرشانت کشور نے سروے کرواتے ہوئے ایک مفصل اور جامع رپورٹ کے چندر شیکھر راو کے حوالہ کردی ہے۔ سروے رپورٹ کے مطابق اگر ریاست میں فوری انتخابات منعقد کرائے جاتے ہیں تو ٹی آر ایس کی کامیابی طئے ہے۔

کسی دوسری جماعت پر انحصار کرنے کی ضرورت نہیں رہے گی اور ٹی آر ایس اپنے بل بوتے پر حکومت تشکیل دینے کیلئے درکار نشستوں پر کامیابی حاصل کرلے گی۔ جبکہ کانگریس کے مظاہرہ میں حیریت انگیز بہتری آئیگی اور کانگریس دوسرے نمبر پر رہے گی۔

 سروے رپورٹ میں بی جے پی کے امکانات کو برائے نام ظاہر کیا گیا۔ حالیہ عرصہ کے دوران ریاست میں بی جے پی کی جانب سے حصول اقتدار کو مقصد بناتے ہوئے سیاسی سرگرمیوں میں تیزی لائی گئی ہے۔ پرشانت کشور کی رپورٹ کے مطابق بی جے پی کا اثر صرف پانچ تا آٹھ حلقوں میں رہے گا۔

ریاست کے کئی حلقوں میں بی جے پی مقابلہ کرنے کے موقف میں بھی نہیں رہے گی۔ سروے میں مزید بتایا گیا کہ ٹی آر ایس میں کئی سالوں سے موجود چند سینئر قائدین اور اراکین کی کارکردگی سے عوام میں عدم اطمینان پایا جاتا ہے اور ان کو تبدیل کرنے کا مشورہ دیا گیا۔

 پارٹی کے امکانات کو مستحکم کرنے کیلئے نئے راشن کارڈس اور پنشن منظور کرنے کا مشورہ دیا گیا۔ اس کے لئے چند وزارتوں سے موجودہ وزراء کو ہٹانے کی سفارش کئے جانے کی بھی اطلاع ہے۔ اس سروے رپورٹ کے مطابق ٹی آر ایس کا موقف مضبوط ہے اور اس کی ہیٹرک تقریباً طئے ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button