پرچہ کا افشاء، یوپی ٹیٹ منسوخ، 23 افراد گرفتار

چیف منسٹر یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا کہ خاطیوں کے خلاف قومی سلامتی قانون اور گینگسٹر ایکٹ کے تحت معاملہ درج ہوگا۔ انہوں نے اندرون ایک ماہ دوبارہ امتحان لینے کا حکم دیا۔

لکھنو: یوپی ٹیٹ امتحان جو اتوار کو منعقد ہونے والا تھا‘ پرچہ سوالات کے افشاء کی وجہ سے منسوخ ہوگیا۔ ایڈیشنل ڈائرکٹر جنرل لا اینڈ آرڈر پرشانت کمار نے امتحان شروع ہونے سے کچھ دیر پہلے اس کا اعلان کیا۔

19 لاکھ 99 ہزار امیدوار یوپی ٹیٹ میں شرکت کرنے والے تھے۔

پرشانت کمار نے میڈیا کو بتایا کہ اسپیشل ٹاسک فورس(ایس ٹی یف) نے ٹیکنیکل اور دیگر انٹلیجنس استعمال کرتے ہوئے یوپی کے مختلف شہروں سے کل رات 23 افراد کو گرفتار کیا۔

لکھنوسے 4‘ پریاگ راج سے13‘ ضلع کوشمبی سے 1 اور میرٹھ سے 3 گرفتاریاں ہوئیں۔ان سے پرچہ سوالات کی فوٹو کاپی لے کر حکومت کو دی گئی۔

پتہ چلا ہے کہ یہ پرچہ سوالات کی ہوبہو نقل ہے۔ حکومت نے فوری امتحان منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا۔ اب امتحان آئندہ ایک ماہ میں ہوگا۔

اس امتحان کے تمام اخراجات حکومت برداشت کرے گی۔ امیدواروں کو فیس دینا نہیں پڑے گا۔

یوپی ایس آر ٹی سی کی بسوں کے ذریعہ امیدواروں کو ان کے متعلقہ مقامات واپس بھیج دیا جائے گا۔ ٹکٹ نہیں لیا جائے گا‘ کنڈکٹر کو ہال ٹکٹ دکھادینا کافی ہوگا۔ یوپی یس ٹی ایف تحقیقات کرے گی۔

اتوار کی صبح تک پرچہ سوالات امتحانی مراکز نہیں پہنچا تھا۔ یوپی کے علاوہ بہار سے بھی کچھ لوگ پکڑے گئے ہیں۔

چیف منسٹر یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا کہ خاطیوں کے خلاف قومی سلامتی قانون اور گینگسٹر ایکٹ کے تحت معاملہ درج ہوگا۔ انہوں نے اندرون ایک ماہ دوبارہ امتحان لینے کا حکم دیا۔

بعدازاں ہندی میں ٹویٹ میں چیف منسٹر نے کہا کہ پرچوں کے افشاء میں ملوث افراد کی جائیدادیں ضبط کرلی جائیں گی۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button