ہندو مہا سمیلن میں متنازعہ تقریر، پی سی جارج کے خلاف شکایت

پی سی جارج نے اننت پورم میں ہندو مہا سمیلن میں یہ متنازعہ افتتاحی تقریر کی تھی۔ یوتھ لیگ کے ریاستی جنرل سکریٹری پی کے فیروز نے فیس بک پر ایک پوسٹ پر کہا کہ انہوں نے پی سی جارج کے خلاف ایک شکایت درج کرائی ہے۔

کوزی کوڈ: تقریر کے دوران مبینہ طورپر مسلم طبقہ کی اہانت پرسینئر لیڈر پی سی جارج کے خلاف چیف منسٹر اور ڈی جی پی سے شکایت کی ہے۔

پی سی جارج نے اننت پورم میں ہندو مہا سمیلن میں یہ متنازعہ افتتاحی تقریر کی تھی۔ یوتھ لیگ کے ریاستی جنرل سکریٹری پی کے فیروز نے فیس بک پر ایک پوسٹ پر کہا کہ انہوں نے پی سی جارج کے خلاف ایک شکایت درج کرائی ہے۔

فیروز نے الزام عائد کیا کہ جارج نے اپنی ساری تقریر کے دوران مسلم طبقہ کی اہانت کی اور دانستہ طورپر فرقہ وارانہ منافرت پیدا کرنے کی کوشش کی۔

شکایت کے بموجب پی سی جارج نے یہ سنگین الزامات عائد کئے کہ مسلم تاجرین دانستہ طورپر مشروبات میں بانجھ پن کی دوائیں ملارہے ہیں‘ مسلمان اپنی آبادی میں اضافہ کی کوشش کررہے ہیں اور ملک کو ایک مسلم ملک میں تبدیل کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ مسلم رہنما تین بار تھوک کر غذا تقسیم کررہے ہیں۔

تبصرہ کریں

Back to top button