چیف جسٹس این وی رمنا نے جسٹس للت کو اپنا جانشین بنانے کی سفارش کی

سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کے سیکرٹریٹ کو چہارشنبہ کو وزارت قانون و انصاف کی طرف سے ایک خط موصول ہوا، جس میں ان (جسٹس رمنا) سے اپنے جانشین کے نام کی سفارش کرنے کی درخواست کی گئی تھی۔

نئی دہلی: چیف جسٹس آف انڈیا این۔ وی رمنا نے سینئر ترین جج ادے امیش للت کو اپنا جانشین نامزد کرنے کی سفارش کی ہے۔ جسٹس رمنا نے جمعرات کو مرکزی وزارت قانون و انصاف کو 3 اگست کو بھیجے گئے سفارشی خط کی ایک کاپی جسٹس للت کو سونپی۔

سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کے سیکرٹریٹ کو چہارشنبہ کو وزارت قانون و انصاف کی طرف سے ایک خط موصول ہوا، جس میں ان (جسٹس رمنا) سے اپنے جانشین کے نام کی سفارش کرنے کی درخواست کی گئی تھی۔ جسٹس رمنا 48 ویں چیف جسٹس آف انڈیا (سی جے آئی) 26 اگست کو ریٹائر ہونے والے ہیں۔ سنیارٹی کے لحاظ سے ان کے بعد جسٹس للت آتے ہیں، جو (سفارش کے مطابق) 49ویں چیف جسٹس ہوں گے۔

وکالت کرتے ہوئے 13 اگست 2014 کو براہ راست سپریم کورٹ کے جج بننے والے جسٹس للت کے 27 اگست 2022 کو چارج سنبھالنے کے امکانات ہیں۔ اگر وہ چیف جسٹس بنتے ہیں (جس کا بہت امکان ہے) تو وہ دو ماہ اور 13 دن بعد 8 نومبر 2022 تک اس عہدے پر برقرار رہیں گے۔

جسٹس للت جون 1983 میں ایڈوکیٹ کے طور پر رجسٹرڈ ہوئے اور دسمبر 1985 تک بامبے ہائی کورٹ میں پریکٹس کرتے رہے۔ انہیں اپریل 2004 میں سپریم کورٹ نے سینئر وکیل کے طور پر نامزد کیا تھا۔

چیف جسٹس نے انہیں سنٹرل بیورو آف انوسٹی گیشن (سی بی آئی) کے لیے خصوصی پبلک پراسیکیوٹر (ایس پی پی) کے طور پر مقرر کیا تھا تاکہ وہ 2 جی اسپیکٹرم گھوٹالے کے تمام مقدمات کی سماعت کریں۔

تبصرہ کریں

Back to top button