کانگریس،نتائج کے اعلان کے بعد نئے قائد کا انتخاب کرے گی

سابق چیف منسٹر ہریش راوت اور صدر پنجاب پردیش کانگریس نوجوت سنگھ سدھو کے حامی چاہتے ہیں کہ اِنہیں چیف منسٹر کے چہرہ کے طورپر اُبھارا جائے لیکن پارٹی کا کہنا ہے کہ اِس سے خطرہ ہے کہ الیکشن سے قبل دیگر دھڑے ناراض ہوجائیں گے۔

نئی دہلی۔: پانچ ریاستوں کے اسمبلی الیکشن میں کانگریس نے امیدوار چیف منسٹری کا اعلان کئے بغیر میدان میں اُترنے کا فیصلہ کیا ہے۔

حالانکہ پنجاب میں موجودہ چیف منسٹر اُس کیلئے امیدوار چیف منسٹری کے طورپر موجود ہے۔ کانگریس ذرائع کا کہنا ہے کہ نتائج آنے کے بعد ہی فیصلہ ہوگا۔ کانگریس لیجسلیٹو پارٹی ہائی کمان کی مرضی سے نئے قائد کا فیصلہ کرے گی۔

پنجاب اور اتراکھنڈ کے کانگریس قائد چاہتے ہیں کہ امیدوار چیف منسٹری کا اعلان ہوجائے۔

سابق چیف منسٹر ہریش راوت اور صدر پنجاب پردیش کانگریس نوجوت سنگھ سدھو کے حامی چاہتے ہیں کہ اِنہیں چیف منسٹر کے چہرہ کے طورپر اُبھارا جائے لیکن پارٹی کا کہنا ہے کہ اِس سے خطرہ ہے کہ الیکشن سے قبل دیگر دھڑے ناراض ہوجائیں گے۔

کانگریس کو پنجاب میں اقتدار برقراررکھنے کے بڑے چیلنج کا سامنا ہے۔ اُسے اترپردیش، اتراکھنڈ، گوا اور منی پور میں بی جے پی سے کڑا مقابلہ درپیش ہے۔

اترپردیش کو چھوڑ کر تین ریاستوں میں اُس کا راست مقابلہ بی جے پی سے ہوگا جبکہ پنجاب میں اُس کا مقابلہ اکالی دل۔ بی ایس پی اور عام آدمی پارٹی سے ہے۔

اترپردیش میں کانگریس اصل مد مقابل نہیں ہے لیکن وہ چاہتی ہے کہ مقابلہ میں بی ایس پی سے آگے رہے۔ گوا میں کانگریس کو بحران کا سامنا ہے جہاں اُس کے لگ بھگ سبھی ارکان اسمبلی پارٹی چھوڑکر جاچکے ہیں۔

منی پور میں بھی اُسے ایسی صورتحال کا سامنا کرنا پڑا۔ کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی وڈرا یوپی میں پارٹی کی اولین پسند ہیں لیکن کسی کو بھی امیدوار چیف منسٹری کے طورپر پیش کرنے کا امکان نہیں۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button