کراچی میں طیارہ کی ایمرجنسی لینڈنگ کی تحقیقات کا حکم

اس واقعہ کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے ڈائریکٹوریٹ جنرل نے اس کی جانچ کا حکم دیا ہے۔ اسپائس جیٹ کے ترجمان نے کہا تھا کہ طیارہ کراچی میں اترا۔ کسی ہنگامی صورتحال کا اعلان نہیں کیا گیا اور طیارے نے معمول کی لینڈنگ کی۔

نئی دہلی: شہری ہوا بازی کے ڈائریکٹوریٹ جنرل (ڈی جی سی اے) نے اسپائس جیٹ کی دہلی سے دبئی جانے والی پرواز کی ہنگامی لینڈنگ کے واقعہ کی جانچ کا حکم دیا ہے۔ اسپائس جیٹ کے B737 طیارے نے دبئی کے لیے ٹیک آف کے بعد کراچی، پاکستان میں ہنگامی لینڈنگ کی۔ جہاز میں سوار تمام مسافروں کو بحفاظت اتار لیا گیا۔

اس واقعہ کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے ڈائریکٹوریٹ جنرل نے اس کی جانچ کا حکم دیا ہے۔ اسپائس جیٹ کے ترجمان نے کہا تھا کہ طیارہ کراچی میں اترا۔ کسی ہنگامی صورتحال کا اعلان نہیں کیا گیا اور طیارے نے معمول کی لینڈنگ کی۔ اس سے قبل طیارے میں کسی خرابی کی کوئی اطلاع نہیں تھی۔ انڈیکیٹر لائٹس میں فنی خرابی کے باعث طیارے کو کراچی کی طرف موڑ دیا گیا۔

ترجمان نے کہا کہ مسافروں کو ریفریشمنٹ فراہم کی گئی ہے۔ کراچی کے لیے طیارہ بھیجا جا رہا ہے جو مسافروں کو دبئی لے جائے گا۔ پچھلے 17 دنوں میں اسپائس جیٹ کے طیارے میں یہ چھٹا واقعہ ہے۔

اس سے پہلے ہفتے کے روز، نئی دہلی سے مدھیہ پردیش کے جبل پور جانے والی اسپائس جیٹ کی پرواز دہلی کے ہوائی اڈے پر بحفاظت اتر گئی جب اس کے کیبن میں دھواں بھر گیا۔ عملے کے ارکان نے تقریباً 5000 فٹ کی بلندی پر کیبن میں دھواں دیکھا۔

تبصرہ کریں

Back to top button