کرشنا گزٹ: تلنگانہ سے شدید نا انصافی: پروفیسر کودنڈا رام

پروفیسر کودنڈا رام نے مطالبہ کیاکہ اس گزٹ کو منسوخ کیاجائے۔تلنگانہ میں کانگریس کے دور سے زیرالتوا پروجیکٹس کو مکمل کرتے ہوئے اس ریاست کے عوام کو پانی کی فراہمی کو یقینی بنایاجائے اور ان سے انصاف کیاجائے۔

حیدرآباد: صدرنشین تلنگانہ جناسمیتی پروفیسر کودنڈارام نے واضح کیا ہے کہ کرشنا گزٹ کے ذریعہ تلنگانہ سے شدید ناانصافی کی جارہی ہے تاہم اس کی حکومت کو کوئی پرواہ نہیں ہے۔ کرشنا اور تنگبھدرادریاوں کے تحفظ کی یاترا کے حصہ کے طورپر انہوں نے جوگولامباگدوال ضلع کے عالم پور کا دورہ کیا۔انہوں نے دریائے کرشنا کا معائنہ کیا۔

بعد ازاں انہوں نے گوندی مل بیریج سادھناسمیتی کے ذمہ داروں سے بھی ملاقات کرتے ہوئے تفصیلات حاصل کیں۔انہوں نے ساتھ ہی تنگبھدرادریا پر تعمیر کئے جانے والے لفٹ اریگیشن پروجیکٹ کا بھی معائنہ کیا۔اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے پروفیسر کودنڈارام نے کہا کہ مرکزی حکومت نے ایک گزٹ جاری کیا ہے جس کے مطابق تلنگانہ کے تمام پروجیکٹس مرکز کے تحت آگئے ہیں۔

مرکز نے اجازت کے بغیر شروع کردہ پروجیکٹس کو روک دیا ہے۔تلنگانہ کو دریائے کرشنا سے اس کے پانی کا حصہ نہیں مل رہا ہے۔انہوں نے مطالبہ کیاکہ اس گزٹ کو منسوخ کیاجائے۔تلنگانہ میں کانگریس کے دور سے زیرالتوا پروجیکٹس کو مکمل کرتے ہوئے اس ریاست کے عوام کو پانی کی فراہمی کو یقینی بنایاجائے اور ان سے انصاف کیاجائے۔

تبصرہ کریں

Back to top button