کرناٹک میں اب مندر کو مسلم تاجر کی طرف سے کیلے سپلائی کرنے پر تنازعہ

مندرکے ذمہ داروں کا کہنا ہیکہ انہوں نے گذشتہ برس کیلوں کی سپلائی کیلئے ٹنڈرجاری کیاتھا۔ چاربولی دہندوں میں سب سے کم کوٹیشن مسلم تاجر کاتھا جس کی وجہ سے اسے ٹھیکہ دے دیاگیا۔

منگلورو: کرناٹک کے اس شہر کے مضافات کڈوپو کے اننت پدمانابھا مندر کو کیلے (موز) سپلائی کرنے کا ٹھیکہ گذشتہ برس ایک مسلمان تاجر کو دئیے جانے پر تنازعہ پیدا ہوگیا ہے۔ مندر کے ذمہ داروں نے یکم جولائی 2021 تا 30 جون2022 مندر کو کیلے سپلائی کرنے کیلئے اس تاجر کوٹھیکہ دیاتھا جس نے سب سے کم بولی لگائی تھی۔

مسلم تاجر کو ٹھیکہ دئیے جانے کا تاخیر سے پتہ چلنے پر دایاں بازو کی ہندو تنظیموں نے احتجاج کیا۔ مندرکے ذمہ داروں کا کہنا ہیکہ انہوں نے گذشتہ برس کیلوں کی سپلائی کیلئے ٹنڈرجاری کیاتھا۔ چاربولی دہندوں میں سب سے کم کوٹیشن مسلم تاجر کاتھا جس کی وجہ سے اسے ٹھیکہ دے دیاگیا۔

مندر کو مسلم تاجر کی طرف سے کیلوں کی سپلائی کا معاملہ حال میں سامنے آیا جس پر ہندو تنظیموں نے احتجاج کیا۔ مندرکے ایگزیکیٹیوعہدیدار جگدیش نے جنہوں نے حال میں چارج حاصل کیا ہے احتجاجیوں سے کہا کہ 30جون کے بعد مسئلہ خودبخود حل ہوجائے گا کیونکہ 30جون کو ٹھیکہ ختم ہوجائے گا۔ ان کے اس تیقن پر احتجاج وقتیہ طور پر ختم ہوگیا۔

تبصرہ کریں

Back to top button