گیان واپی مسجد کیس کی سماعت، وارانسی میں سخت سیکوریٹی انتظامات

ڈسٹرکٹ جج کی عدالت پیر کے دن سماعت شروع کرنے کے امور کو واضح کرے گی۔ دریں اثنا پولیس کے سینئر عہدیداروں نے آج بتایا کہ کیس کی سماعت کے دوران کسی بھی پریشانی کا سامنا نہ کرنے کا تیقن کرنے معقول سیکوریٹی انتظامات کیے گئے ہیں۔

وارانسی: آج سے گیان واپی شرینگر گوری کیس کی ڈسٹرکٹ جج کی عدالت میں سماعت شروع ہونے کے پیش نظر وارانسی میں سیکوریٹی سخت کردی گئی ہے۔ کیس کی سماعت سیول جج کی ٹرائیل کورٹ سے منتقل کرنے 20 مئی سپریم کورٹ کے جاری کردہ حکم کی تعمیل میں کیس کے تمام امثلہ جات ڈسٹرکٹ کورٹ کو منتقل کردیے گئے ہیں۔

 ڈسٹرکٹ کے سرکاری وکیل مہندرا پرساد پانڈے نے بتایا کہ ڈسٹرکٹ جج کی عدالت پیر کے دن سماعت شروع کرنے کے امور کو واضح کرے گی۔ دریں اثنا پولیس کے سینئر عہدیداروں نے آج بتایا کہ کیس کی سماعت کے دوران کسی بھی پریشانی کا سامنا نہ کرنے کا تیقن کرنے معقول سیکوریٹی انتظامات کیے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مناسب تعداد میں فورس تعینات کی گئی ہے اور احتیاطی اقدام کے طور پر سڑکوں پر رکاوٹیں کھڑی کی گئی ہیں۔

پانچ خاتون بھکتوں دہلی کی راکھی سنگھ اور وارانسی کی لکشمی دیوی، سیتا ساہو، منجو ویاس اور ریکھا پاٹھک نے مسجد کے علاقہ میں دیوی شرینگر گوری کی روزانہ پوجا کرنے کی اجازت کے لیے 18 اپریل 2011ء کو سیول جج کی عدالت میں ایک درخواست داخل کی تھی۔

اس سال 8 اپریل کو عدالت نے گیان واپی مسجد کا سروے کرنے اجئے کمار مشرا کو ایڈوکیٹ کمشنر مقرر کیا تھا۔ مدعا علیہ انجمن انتظامیہ مسجد کمیٹی سروے کے لیے حکم اور ایڈوکیٹ کمشنر کے تقرر کو چیلنج کرنے الٰہ آباد ہائی کورٹ میں درخواست داخل کی تھی، جو مسترد کردی گئی۔

 کورٹ کمیشن نے 6 مئی کو گیان واپی مسجد کا سروے شروع کیا، لیکن مسجد کمیٹی کے احتجاج اور ایڈوکیٹ کمشنر کو تبدیل کرنے سیول جج سے مطالبہ پر دوسرے دن سروے روک دیا گیا۔ عدالت نے درخواست مسترد کرکے وشال سنگھ کو خصوصی ایڈوکیٹ کمشنر اور اجئے پرتاپ سنگھ کو اسسٹنٹ ایڈوکیٹ کمشنر مقرر کیا۔

 کورٹ کمیشن نے 14 مئی کو دوبارہ سروے کا آغاز کیا اور 16 مئی کو دعویٰ کیا کہ مسجد کے وضو کے حوض میں ایک شیولنگ پایا گیا ہے۔ عدالت نے سروے کی معلومات کو افشاء کرنے کی شکایت کے بعد مشرا کو برطرف کیا اور اسپیشل ایڈوکیٹ کمشنر وشال سنگھ سے کہا کہ وہ اپنی سروے رپورٹ 19 مئی کو پیش کریں۔

 انتظامیہ کمیٹی کی درخواست کی 20 مئی کو سماعت کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے گیان واپی مسجد کیس میں جاری کردہ سروے کے حکم میں دخل اندازی سے انکار کرتے ہوئے کیس سیول جج کی عدالت سے ڈسٹرکٹ جج وارانسی کو منتقل کرنے کے احکام جاری کیے۔

سپریم کورٹ نے کہا کہ مقدمہ کی پیچیدگیوں اور حساسیت کو دیکھتے ہوئے یہ بہتر ہوگا کہ کیس سینئر جوڈیشیل عہدیدار جو 30 سالہ تجربہ رکھتا ہے، کو منتقل کیا جائے۔

تبصرہ کریں

Back to top button