ہندوستانی بھائی سکہ خان کو پاکستانی ویزا جاری

اس سلسلہ میں پاکستانی ہائی کمیشن کا کہنا ہے کہ کرتار پور صاحب راہداری میں دو بچھڑے بھائیوں کی جذباتی ملاقات پاکستان کی ان کوششوں کا ایک حصہ ہے جس کے تحت وہ دونوں ممالک کے عوام کو قریب لانے کی کوشش کررہا ہے۔

حیدرآباد: پاکستان کی کرتار پور صاحب راہداری میں 74 برسوں کے بعد دو سگے بھائیوں کی جذباتی ملاقات کے چند دنوں کے بعد پاکستان نے ہندوستان میں مقیم ایک بھائی سکہ خان کو آج ویزا جاری کیا تاکہ وہ پاکستان میں اپنے بھائی محمد صدیق اور دیگر ارکان خاندان سے ملاقات کرسکیں۔

اس سلسلہ میں پاکستانی ہائی کمیشن کا کہنا ہے کہ کرتار پور صاحب راہداری میں دو بچھڑے بھائیوں کی جذباتی ملاقات پاکستان کی ان کوششوں کا ایک حصہ ہے جس کے تحت وہ دونوں ممالک کے عوام کو قریب لانے کی کوشش کررہا ہے۔

پاکستان نے نومبر 2019 میں ویزا فری کرتارپورراہداری کھولی تھی جہاں جانے کیلئے ویزا کی ضرورت نہیں ہے۔ بتایا گیا ہے کہ بٹوارہ کے وقت پنجاب کا نصف حصہ ہندوستان میں جبکہ دوسرا حصہ پاکستان میں رہ گیا اور دونوں بھائی بھی بچھڑ گئے۔

ایک بھائی باپ کے ساتھ پاکستان میں رہ گیا جبکہ دوسرا بھائی ماں کے ساتھ ہندوستان میں مقیم رہا جس کے بعد ان کی کبھی ملاقات نہیں ہوئی۔ ایک دوسرے کی تلاش اس وقت ختم ہوئی جب ان کے ویڈیوز سوشل میڈیا پر وائرل ہوئے۔

پاکستانی یوٹیوبر ناصر ڈھلون نے صادق خان کی اپیل یوٹیوب پر اپلوڈ کی۔ اسے سکہ خان کے گاؤں کے ایک ڈاکٹر کا فون موصول ہوا۔

اس کے بعد بھی دو بھائیوں کو ملنے دو سال لگ گئے۔ جب دو بھائی کرتار پور راہداری میں ملے تو ان کے فوٹوز اور ویڈیوز دنیا بھر میں وائرل ہوگئے۔

اِس موقع پر سکہ خان نے وزیراعظم پاکستان عمران خان سے اس کیلئے پاکستان کا ویزا جاری کرنے کی اپیل کی تھی۔ آج پاکستان نے ویزا جاری کردیا۔

ذریعہ
منصف ویب ڈیسک

تبصرہ کریں

Back to top button