ہندوستان کا سرشرم سے جھک گیا:راہول گاندھی

کانگریس لیڈر راہول گاندھی نے پولیس لاٹھی چارج کے بعد ایک کسان کی خون میں لت پت کپڑوں والی تصویر ٹوئٹر پر شیئر کی اور کہا کہ اس تصویر نے ہندوستان کو شرمندہ کردیا ہے۔

نئی دہلی: کانگریس نے آج کرنال میں احتجاج کرنے والے کسانوں پر لاٹھی چارج کی سخت مذمت کی اور ہریانہ میں بی جے پی۔ جے جے پی حکومت کا موازنہ ”جنرل ڈائر حکومت“ سے کیا۔

کانگریس لیڈر راہول گاندھی نے پولیس لاٹھی چارج کے بعد ایک کسان کی خون میں لت پت کپڑوں والی تصویر ٹوئٹر پر شیئر کی اور کہا کہ اس تصویر نے ہندوستان کو شرمندہ کردیا ہے۔

انہوں نے ”فارمرس پروٹسٹ“ اور ”اینٹی فارمر بی جے پی“ کے ہیش ٹیاگس کا استعمال کرتے ہوئے ہندی میں ٹوئٹ کیا ”ایک مرتبہ پھر کسانوں کا خون بہایا گیا، ہندوستان کا سر شرم سے جھک گیا“۔

کانگریس کے ترجمان اعلیٰ رندیپ سرجے والا نے حملہ کی مذمت کی اور بی جے پی۔جے جے پی حکومت کو”جنرل ڈائرحکومت“ قرار دیا۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ منوہر لال کھٹر سرکار (برطانوی حکمراں) جنرل ڈائر کی طرح کسانوں کے ساتھ بربریت میں ملوث ہورہی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ مودی کی زیر قیادت مرکزی حکومت اور کھٹر کی زیر قیادت ریاستی انتظامیہ نے پہلے تین زرعی قوانین کے ذریعہ زراعت کا قتل کیا اور اب بی جے پی۔جے جے پی حکومت کسانوں کا خون بہارہی ہے۔

انہوں نے کسانوں کی خون میں لت پت تصاویر اور کسانوں کی پٹائی کرنے کی پولیس ملازمین کو ہدایت دینے والے ایک عہدیدار کا ویڈیو بھی شیئر کیا ہے۔ سرجے والا نے کرنال کے مجسٹریٹ کسانوں پرقاتلانہ حملہ کا الزام عائد کیا ہے۔

کانگریس کی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی نے فیس بک پر زخمی کسانوں کی تصاویر شیئر کیں۔انہوں نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم پر لکھا ”کسان سخت محنت کے ساتھ اپنے کھیتوں میں خوبصورت فصلیں اُگاتے ہیں اور جب اپنے حقوق کا مطالبہ کرتے ہیں تو بی جے پی حکومت ان پر لاٹھیاں برساتے ہوئے انہیں لہو لہان کرتی ہے“۔ چیف منسٹر دہلی اروندکجریوال اور دیگر قائدین نے کسانوں پر لاٹھی چارج کی سخت الفاظ میں مذمت کی ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button