یوپی میں کانگریس کی انتخابی مہم کا آغاز، عوامی جلسہ سے پرینکا کا خطاب

پرین گاندھی نے اعلان کیا کہ کانگریس‘ مرکزی وزیر اجئے مشرا کے مستعفی ہونے تک لکھیم پور کی لڑائی جاری رکھے گی۔ یوگی پر تنقید کرتے ہوئے کانگریس قائد نے کہاکہ یوگی نے صفائی کرمچاری کے طورپر کام کرنے والے دلتوں کی بے عزتی کی ہے۔

 وارنسی(یوپی)۔10۔اکتوبر(آئی اے این ایس) کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی وڈرا نے اتوار کے دن یو پی اسمبلی الیکشن کیلئے اپنی پارٹی کی انتخابی مہم برسر اقتدار بی جے پی پر سخت تنقید کے ساتھ شروع کردی۔ وارنسی میں زبردست ریالی سے خطاب میں پرینکا نے کسانوں کے مسئلہ اور غریبوں سے نا انصافی پر مرکز اور ریاستی حکومت کو گھیرا۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ دو سال میں میں یو پی میں کام کرتی رہی ہوں۔ دو سال قبل سون بھدرا میں اراضی کے جھگڑے میں 13آدی واسی مارے گئے تھے۔ برسر اقتدار بی جے پی کے بعض قائدین اس میں ملوث تھے۔

 لوگوں نے کہا تھا کہ انہیں انصاف ملنے کی کوئی امید نہیں۔ میں وہاں گئی تھی اور ہر مہلوک کے کنبے نے کہا تھا کہ وہ انصاف چاہتا ہے۔ پرینکا نے کہا کہ اس کے بعد کورونا کی وباء آئی۔ لوگ آکسیجن اور دوائیں نہ ہونے کی وجہ سے مرنے لگے۔ لوگوں کو امید تھی کہ حکومت ان کی مدد کو آئے گی۔ کئی لوگ اسی امید میں مر گئے۔

 اس کے بعد ہاتھرس کا واقعہ پیش آیا اور حکومت نے ملزمین کی پشت پناہی کی۔ متاثرہ لڑکی کے گھر والوں کو انصاف نہیں ملا۔ لکھیم پور میں بھی ایسا ہی ہوا جہاں ایک وزیر کے لڑکے نے کسانوں کو اپنی گاڑی سے کچل دیا۔ حکومت ملزم کو بچا رہی ہے۔

پرین گاندھی نے اعلان کیا کہ کانگریس‘ مرکزی وزیر اجئے مشرا کے مستعفی ہونے تک لکھیم پور کی لڑائی جاری رکھے گی۔ انہوں نے کہا کہ دنیا میں کہیں بھی ایسا نہیں ہوتا کہ پولیس بیان درج کرانے کیلئے ملزم کو دعوت نامہ بھیجتی ہو لیکن لکھیم پور میں وزیر کے لڑکے کو بیان درج کرانے کیلئے مدعو کیا گیا۔ کیا انصاف اس طرح ہوتا ہے؟۔

 چیف منسٹر یو پی یوگی آدتیہ ناتھ پر تنقید کرتے ہوئے کانگریس قائد نے کہاکہ یوگی نے صفائی کرمچاری کے طورپر کام کرنے والے دلتوں کی بے عزتی کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں لکھنو میں والمیکی مندر گئی تھی جہاں میں نے فرش پر جھاڑو ماری۔ میں نے دلت بستی کے لوگوں سے ملاقات کی جہاں مجھے ہر خاندان نے بتایا کہ ان کے بچوں کو تعلیم یافتہ ہونے کے باوجود روزگار نہیں مل رہا ہے۔

 آج وزیر اعظم کے کروڑ پتی دوست روزانہ ہزاروں کروڑ روپئے کما رہے ہیں لیکن ملک کے عوام کو بیروزگاری کا سامنا ہے۔ پرینکا گاندھی نے کہا کہ وزیراعظم نے اپنے لئے 8-8ہزار کروڑ کے دو طیارے خریدے۔ ملک کے خزانہ پر 16ہزار کروڑ کا بوجھ پڑا لیکن دوستوں کو فائدہ پہنچانے کیلئے ایر انڈیا 18ہزار کروڑ میں بیچ دی گئی۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button