یوکرائنی ہتھیار نہیں ڈالیں گے، ہم خوفزدہ نہیں ہیں:یوکرین صدر زیلینسکی

زیلینسکی نے اپنے ٹیلی گرام چینل میں بتایاکہ"انہوں نے کئی بار ہمیں تباہ کرنے کی کوشش کی لیکن ناکام ہو ئے۔ اگر کوئی یہ سمجھتا ہے کہ یوکرینی خوفزدہ ہو جائیں گے، ٹوٹ جائیں گے یا ہتھیار ڈال دیں گے،تو وہ یوکرین کے بارے میں کچھ نہیں جانتا۔"

کیف: روس کی کارروائی آٹھویں دن میں داخل ہونے اور 2000 سے زیادہ یوکرائنی شہریوں کے مارے جانے کے خدشے کے دوران صدر ولادیمیر زیلنسکی نے جمعرات کو اعلان کیا کہ ان کے لوگ خوفزدہ نہیں ہیں، نہ ٹوٹیں گے اور نہ ہی ہتھیار ڈالیں گے۔ زیلینسکی نے اپنے ٹیلی گرام چینل میں بتایاکہ”انہوں نے کئی بار ہمیں تباہ کرنے کی کوشش کی لیکن ناکام ہو ئے۔ اگر کوئی یہ سمجھتا ہے کہ یوکرینی خوفزدہ ہو جائیں گے، ٹوٹ جائیں گے یا ہتھیار ڈال دیں گے،تو وہ یوکرین کے بارے میں کچھ نہیں جانتا۔”

یوکرائنی صدر نے کہاکہ ’’گھر جاؤ۔ روسی زبان بولنے والے لوگوں کی حفاظت کرو۔”یوکرین کے وزیر خارجہ دمتری کولیبا نے بدھ سے اینرگودر میں جاری زبردست مزاحمت کے بارے میں کہا کہ یہ یوکرین کے لیے حقیقی عوامی جنگ ہے۔ کولیبا نے بتایاکہ "روسی صدر ولادیمیر پوٹن کے پاس اسے جیتنے کا کوئی امکان نہیں ہے۔ ہمیں یوکرین کے دفاع کے لیے شراکت داروں کی ضرورت ہے۔ خاص طور پر ہوا میں۔ اب آسمان بند کرو!

53,000 سے کم آبادی والے دریائے ڈینیپر کے کنارے واقع اینرگودر میں جمعرات کو سیکڑوں لوگوں نے روسی فوجی قافلوں کو روکنے کے لیے مرکزی سڑکوں کو بلاک کر دیا۔ یورپ کا سب سے بڑا پاور پلانٹ اور زبپروزیا نیوکلیئر پاور پلانٹ اینرگوڈارمیں واقع ہے۔

یہ بھی پڑھیں
ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button