یوکرین کے خیرسن پر روس کا مکمل قبضہ، ہتھیار ضبط

روسی فوجیوں نے 10 امریکی ساختہ جیولین اینٹی ٹینک میزائل سسٹم اور مغربی ممالک کی طرف سے یوکرین کو فراہم کیے گئے متعدد ہتھیاروں کو ضبط کیا ہے۔

ماسکو: روسی فوجی دستوں نے یوکرین کے جنوب میں خیرسن علاقے پر مکمل قبضہ کر لیا ہے۔ یہ بات روس کی وزارت دفاع کے ترجمان ایگور کوناشینکوف نے منگل کو کہی۔ کوناشیکوف نے کہا کہ روسی فوجیوں نے کیف کے قریب ہوٹا-میزہرسکا علاقے میں یوکرینی اور غیر ملکی فوجیوں کو گرفتار کرنے اور 10 امریکی ساختہ جیولین اینٹی ٹینک میزائل سسٹم کو اپنی تحویل میں لینے کی اطلاع دی۔

کوناشیکوف نے صحافیوں کو بتایا کہ "روسی فوجی دستوں نے خیرسن کے پورے علاقے پر قبضہ کر لیا ہے۔” ترجمان نے بتایا کہ”14 مارچ کی شام کو روسی فضائی یونٹوں نے ہوٹا میزیہرسکا گاؤں کے قریب یوکرین اور غیر ملکی فوجیوں کے مضبوط گڑھ پر قبضہ کر لیا۔ روسی فوجیوں نے 10 امریکی ساختہ جیولین اینٹی ٹینک میزائل سسٹم اور مغربی ممالک کی طرف سے یوکرین کو فراہم کیے گئے متعدد ہتھیاروں کو ضبط کیا ہے۔‘‘

اسپوٹنک نے ان کے حوالے سے بتایا کہ آپریشن کے دوران ضبط کیے گئے تمام جیولن اینٹی ٹینک سسٹم اور دیگر غیر ملکی ہتھیاروں کو ڈونیٹسک اور لوہانسک پیپلز ریپبلک کی سویلین آرمی یونٹوں کے حوالے کر دیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں
ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button