اشرف غنی کو موت کا خطرہ تھا تو فرار ہونے کی بجائے امریکہ سے مدد مانگتے: زلمے خلیل زاد

امریکہ کے خصوصی نمائندے زلمے خلیل زاد نے اپنے حالیہ انٹرویو میں اشرف غنی کے دعووں کو مسترد کرتے ہوئے کڑی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

کابل: افغانستان کے لیے امریکہ کے خصوصی ایلچی زلمے خلیل زاد نے کہا ہے کہ اگر صدر اشرف غنی کو قتل کیے جانے کا خوف تھا تو انھیں ملک سے بغیر بتائے چلے جانے کے بجائے امریکہ سے مدد مانگنی چاہیے تھی۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق افغان امن اور امریکی فوجیوں کے بحفاظت انخلا کے عمل کی ذمہ داریاں سنبھالنے والے امریکہ کے خصوصی نمائندے زلمے خلیل زاد نے اپنے حالیہ انٹرویو میں اشرف غنی کے دعووں کو مسترد کرتے ہوئے کڑی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

امریکہ کے سابق خصوصی نمائندے برائے افغانستان زلمے خلیل زاد نے سابق افغان صدر اشرف غنی کے قتل کردیئے جانے کے دعوے کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ اگر سابق صدر کو اپنی موت کا خطرہ تھا تو وہ امریکہ سے مدد مانگتے، یوں بغیر بتائے فرار نہ ہوتے۔

یہ بھی پڑھیں
ذریعہ
منصف ویب ڈیسک

تبصرہ کریں

Back to top button