اگنی پتھ احتجاج، مہلوک کو ای دیاکرراؤ کا خراج

دیاکر راو نے کہا کہ وزیراعظم مودی کو چاہئے کہ وہ ملک اورراکیش کے والدین سے معذرت خواہی کریں۔ انہوں نے کہاکہ مودی نے لاکھوں نوجوانوں کی زندگیوں سے کھلواڑکیا ہے جو فوج میں بھرتی کا خواب دیکھنا چاہتے تھے۔

حیدرآباد: اگنی پتھ اسکیم کے خلاف کئے گئے پُرتشدد احتجاج میں سکندرآباد ریلوے اسٹیشن میں ہوئی فائرنگ میں ہلاک راکیش کو تلنگانہ کے وزیر پنچایت راج ای دیاکرراو نے بھرپورخراج پیش کیا۔ انہوں نے سرکاری وہپ ونئے بھاسکر، ارکان کونسل سرینواس ریڈی، بسواراجو سارئیا، رکن اسمبلی نریندر کے ساتھ مل کر ورنگل کے ایم جی ایم اسپتال پہنچ کر بھاسکر کو خراج پیش کیا۔

ر یاستی وزیر نے ان کے غمزدہ ارکان خاندان سے تعزیت کا بھی اظہار کیا۔ اس موقع پر وزیر دیاکر راو نے کہا کہ وزیراعظم مودی کو چاہئے کہ وہ ملک اورراکیش کے والدین سے معذرت خواہی کریں۔ انہوں نے کہاکہ مودی نے لاکھوں نوجوانوں کی زندگیوں سے کھلواڑکیا ہے جو فوج میں بھرتی کا خواب دیکھنا چاہتے تھے۔

اس موقع پر سیاہ پٹیاں باندھ کرٹی آرایس کے لیڈروں اور کارکنوں نے مودی زیرقیادت مرکزی حکومت کے خلاف نعرے بازی کی۔راکیش کے والدین ہنوز سکتہ میں ہیں جنہوں نے اپنے بیٹے کے تابناک مستقبل کا خواب دیکھا تھا۔انہوں نے تاسف کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے بیٹے کو ملک کے لئے خدمت کرتا ہوا دیکھنا چاہتے تھے تاہم پولیس فائرنگ میں اس کی موت ہوگئی۔

یہ بھی پڑھیں

اس نوجوان کی ماں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے مرکزی حکومت سے مطالبہ کیاکہ اگنی پت اسکیم سے دستبرداری اختیار کی جائے اور ان کے بیٹے کی طرح کئی نوجوانوں کی زندگیوں کو بچایاجائے جو اس اسکیم سے ناخوش ہیں۔

اس نوجوان کی شناخت 21 سالہ راکیش کے طور پر کی گئی ہے۔ اس کا تعلق ضلع ورنگل کے خانہ پور منڈل کے دبیر پیٹ گاوں سے بتایا گیا ہے۔ نوجوان نے حال ہی میں آرمی (بی ایس ایف، سی آر پی ایف) کا فزیکل ٹسٹ پاس کیا تھا۔اس نے آندھراپردیش کے باپٹلہ میں آرمی کوچنگ سنٹر میں ٹریننگ حاصل کی تھی اور وہ گزشتہ 3 سال سے ہنمکنڈہ میں رہتے ہوئے تحریری امتحان کی تیاری کررہا تھا۔

جیسے ہی مرکز کی جانب سے اگنی پتھ کا اعلان کیا گیا وہ سخت مایوس ہوگیا تھا۔ مہلوک کو دو بہنیں اور ایک بھائی بتایا گیا ہے۔ اس کے باپ کا نام کمارا سوامی اور ماں کا نام پولماں بتایا گیا ہے۔ مہلوک کی بڑی بہن رانی کی آرمی میں بی ایس ایف میں ملاز مہ بتائی گئی ہے۔راکیش اس وقت گریجویشن کا طالب علم بتایا گیا ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button