ایکناتھ شنڈے کی گجرات میں دیویندر پھڈنویس سے ملاقات

شیوسینا کے باغی رکن اسمبلی ایکناتھ شنڈے اور بی جے پی کے دویندرپھڈنویس نے کل رات گجرات کے وڈودرا میں ملاقات کی تاکہ مہاراشٹرا میں حکومت کی امکانی تشکیل کے بارے میں تبادلہ خیال کرسکیں۔

گوہاٹی: شیوسینا کے باغی رکن اسمبلی ایکناتھ شنڈے اور بی جے پی کے دویندرپھڈنویس نے کل رات گجرات کے وڈودرا میں ملاقات کی تاکہ مہاراشٹرا میں حکومت کی امکانی تشکیل کے بارے میں تبادلہ خیال کرسکیں۔

وزیر داخلہ امیت شاہ بھی کل رات وڈودرا میں تھے۔ ذرائع نے بتایا کہ شنڈے کل رات خصوصی پرواز سے آسام کے گوہاٹی سے وڈودرا پہونچے۔

سابق چیف منسٹر مہاراشٹرا پھڈنویس کے ساتھ بات چیت کے بعد شنڈے دوبارہ بی جے پی زیر اقتدار آسام کے دارالحکومت کو واپس ہوگئے جہاں شیوسینا کے تقریبا40 باغی ارکان اسمبلی ایک فائیو اسٹار ہوٹل میں مقیم ہیں۔ ان کے منجملہ 16 ارکان اسمبلی بشمول شنڈے کو مہاراشٹرا کے ڈپٹی اسپیکر نے نااہلی کی نوٹس جاری کی ہے اور ان سے کہا ہے کہ وہ پیر کی شام تک جواب داخل کریں اور ممبئی میں موجود رہیں۔

شنڈے اور دیگر باغی ارکان اپنی سابق شراکت دار بی جے پی کے ساتھ دوبارہ اتحاد کرنا چاہتے ہیں اور ان کا دعویٰ ہے کہ حکومت تشکیل دینے کیلئے ان کے پاس درکار تعداد میں ارکان اسمبلی موجود ہیں۔ نئے گروپ کو ”شیوسینا بالا صاحب“ کا نام دیا گیا ہے۔

جو پارٹی کے بانی اور چیف منسٹر ادھوٹھاکرے کے والد تھے۔ تاہم مہاوکاس اگھاڑی حکومت نے باغیوں سے کہا ہے کہ وہ طاقت کی آزمائش کیلئے واپس آئیں۔ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ شیوسینا 16 باغی ارکان اسمبلی کو نااہل قرار دلوانا چاہتی ہے جبکہ دیگر کو الیکشن میں حصہ لینے سے روکنے کیلئے ان کی حوصلہ شکنی کرنا چاہتی ہے۔

اسی لئے وہ اس بات پر زور دے رہی ہے کہ وہ لوگ آسام سے واپس آئیں۔ جہاں بی جے پی کے شمال مشرق کے انتخابی منصوبہ ساز ہیمنت بسواسرما چیف منسٹر ہیں۔

تبصرہ کریں

Back to top button