بسوال کمیٹی کی سفارش کردہ 1.91لاکھ مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات کا مطالبہ: محمد علی شبیر

حیدرآباد:سابق وزیر وقائد اپوزیشن تلنگانہ کونسل محمد علی شبیر نے کہا کہ پی آر سی کی جانب سے قائم کردہ سی آر بسوال کمیٹی نے ریاست کے سرکاری محکمہ جات میں جملہ1.91مخلوعہ جائیدادوں کی نشاندہی کی تھی تاہم چیف منسٹر کے سی آر نے صرف91,142ہزار جائیدادوں پر تقررات کا اعلان کیا ہے۔

 انہوں نے ماباقی ایک لاکھ مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات سے متعلق چیف منسٹر کے سی آر سے وضاحت کرنے اور مذکورہ اعلان کردہ مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات کے عمل کو مکمل کرنے وقت کا تعین کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ٹویٹر پر جاری کردہ اپنے ایک بیان میں محمد علی شبیر نے کہا کہ سال2014میں انتخابات کے دوران کے سی آر نے ریاست میں آؤٹ سورسنگ کے تمام ملازمین کی خدمات کو مستقل کرنے کا بھی اعلان کیا تھا۔

8سال گزرنے کے بعد بھی یہ وعدہ پورا نہیں کیا گیا۔بیروزگار نوجوانوں کو ماہانہ 3016 روپئے الاؤنس دینے کا وعدہ 4سال گزرنے کے بعد بھی عمل ندارد ہے۔انہوں نے کہا کہ پبلک سرویس کمیشن میں 20لاکھ امیدواروں نے اپنا رجسٹریشن کیا ہے اور وہ حکومت کے اعلامیہ کی اجرائی کے گذشتہ8سال سے منتظر ہیں۔محمد علی شبیر نے مذکورہ تمام وعدوں کو روبہ عمل لانے کا مطالبہ کیا۔انہوں نے کہا کہ مسلسل وعدہ خلافی سے عوام کو حکومت پر اب کوئی بھروسہ نہیں رہا۔

Back to top button