تلنگانہ کو ہم تھلسیمیا سے پاک ریاست بنائیں گے: وزیر صحت ہریش راؤ

ہریش راؤ نے کہا کہ ریڈ کراس سوسائٹی اور کملا سوسائٹی جیسی تنظیموں کے ساتھ ایک اور اعلیٰ سطحی میٹنگ منعقد کی جائے گی تاکہ تھلسیمیاکو روکنے کے لیے مزید اقدامات پر تبادلہ خیال کیا جا سکے۔

حیدرآباد: تلنگانہ کے وزیر صحت ہریش راؤ نے کہا ہے کہ تھلسیمیا کے شکاربچوں کو دیکھ کر تکلیف ہوتی ہے۔ایسے بچوں کیلئے مفت علاج کی سہولت آروگیہ شری کے تحت فراہم کی جارہی ہے۔وزیر ہریش راؤ نے تھلسیمیاا اینڈ سکل سیل سوسائٹی کے زیراہتمام کملا اسپتال اینڈ ریسرچ سنٹر میں منعقدہ پروگرام سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے تلنگانہ میں تھلسیمیاکے مریضوں کو بہتر خدمت پر سوسائٹی کی ستائش کی۔

انہوں نے نشاندہی کرتے ہوئے کہا کہ ریاستی حکومت پہلے ہی تھلسیمیاکے مریضوں کا عثمانیہ، نیلوفر اور گاندھی اسپتالوں میں علاج کر رہی ہے۔ ان کے لئے بلڈ بینک قائم کرنے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ عادل آباد اور کھمم جیسے علاقوں میں یہ بیماری پھیلی ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کملا سوسائٹی کے ساتھ مکمل تعاون کر رہی ہے۔

 ہریش راؤ نے کہا کہ ریڈ کراس سوسائٹی اور کملا سوسائٹی جیسی تنظیموں کے ساتھ ایک اور اعلیٰ سطحی میٹنگ منعقد کی جائے گی تاکہ تھلسیمیاکو روکنے کے لیے مزید اقدامات پر تبادلہ خیال کیا جا سکے۔انہوں نے زوردیتے ہوئے کہا کہ تھلسیمیاکی روک تھام پر توجہ دینی چاہیے۔ ہم تلنگانہ کو تھلسیمیاسے پاک ملک کی پہلی ریاست بنانے کی کوشش کریں گے جہاں کوئی تھلسیمیاکیس نہیں ہوگا۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button