تلنگانہ کے باسر ٹریپل آئی ٹی میں طلبہ کا احتجاج ساتویں دن میں داخل

ضلع کلکٹر مشرف علی،ڈائرکٹر ستیش کمار اور اے ایس پی نے گذشتہ شب تقریباتین گھنٹوں تک احتجاجی طلبہ سے بات چیت کی تاہم یہ بات چیت ناکام ہوگئی ہے۔ طلبہ، ان کے مطالبات کی تکمیل کے لئے وزیراعلی کے چندرشیکھرراو کی جانب سے یقین دہانی کے لئے مُصر ہیں۔

حیدرآباد: تلنگانہ کے باسر ٹریپل آئی ٹی میں طلبہ کا احتجاج ساتویں دن میں داخل ہوگیا ہے۔طلبہ نے ان کے 12مطالبات کی تکمیل پر زوردیا اور کہا کہ اس خصوص میں وزیراعلی کے چندرشیکھرراو کی جانب سے یقین دہانی کروائی جائے۔

ضلع کلکٹر مشرف علی،ڈائرکٹر ستیش کمار اور اے ایس پی نے گذشتہ شب تقریباتین گھنٹوں تک احتجاجی طلبہ سے بات چیت کی تاہم یہ بات چیت ناکام ہوگئی ہے۔طلبہ، ان کے مطالبات کی تکمیل کے لئے وزیراعلی کے چندرشیکھرراو کی جانب سے یقین دہانی کے لئے مُصر ہیں۔

اس احتجاج کی حمایت سابق طلبہ کے ساتھ ساتھ موجودہ طلبہ کے والدین نے کی ہے۔ ان طلبہ نے انتباہ دیتے ہوئے کہاکہ ان کے مسائل کے حل کے سلسلہ میں وزیراعلی کی جانب سے ٹھوس یقین دہانی تک ان کے احتجاج کا سلسلہ جاری رہے گا۔یہ طلبہ، ناقص غذائی معیار کے خلاف احتجاج کررہے ہیں۔

ان کا مطالبہ ہے کہ ادارہ میں بنیادی سہولیات فراہم کی جائیں۔ان طلبہ نے اپنے دیگر تمام 12مطالبات کی حمایت میں پلے کارڈس کے ساتھ نعرے بازی کی۔انہوں نے مطالبہ کیاکہ وزیراعلی کے چندرشیکھرراو اور وزیر آئی ٹی تارک راما راو شخصی طورپراس انسٹی ٹیوٹ کا معائنہ کریں اور ان کو درپیش مسائل کے حل کو یقینی بنائیں۔

پولیس، طلبہ کو انسٹی ٹیوٹ سے باہر نکلنے سے روکنے کے لئے سخت نگرانی رکھے ہوئے ہے۔طلبہ نے الزام لگایا کہ بعض اوقات چھوٹے کیڑے بھی ان کی غذا میں پائے جاتے ہیں۔

تبصرہ کریں

Back to top button