جمہوریت میں تشدد کے لئے کوئی جگہ نہیں: انوراگ ٹھاکر

پیغمبر محمدؐ پر متنازعہ بیانات کے لئے معطل کردہ بی جے پی ترجمان نپورشرما کے خلاف ملک کے کئی حصوں میں حالیہ پرتشدد احتجاجوں کا بظاہرحوالہ دیتے ہوئے مرکزی وزیر انوراگ ٹھاکر نے آج کہا کہ ”جمہوریت میں تشدد کے لئے کوئی جگہ نہیں“۔

لکھنؤ:پیغمبر محمدؐ پر متنازعہ بیانات کے لئے معطل کردہ بی جے پی ترجمان نپورشرما کے خلاف ملک کے کئی حصوں میں حالیہ پرتشدد احتجاجوں کا بظاہرحوالہ دیتے ہوئے مرکزی وزیر انوراگ ٹھاکر نے آج کہا کہ ”جمہوریت میں تشدد کے لئے کوئی جگہ نہیں“۔

بی جے پی کے سابق ترجمانوں نپورشرما اور نوین کمار جندل کی گرفتاری کے مطالبہ پر جمعہ کے دن نماز کے بعد پرہجوم احتجاجوں کے خلاف اترپردیش دہلی‘ مہاراشٹرا اور دیگر ریاستوں میں پولیس کیس درج کئے گئے۔

مرکزی وزیر اطلاعات و نشریات نے یہاں اخباری نمائندوں کو مخاطب کرتے ہوئے ان خیالات کا اظہار کیا اور کہاکہ جمہوریت میں ہر ایک کو اپنا خیال ظاہر کرنے کا موقع دستیاب ہے۔ جب بات چیت کے ذریعہ مسائل حل کئے جاسکتے ہیں تو سنگباری‘ تخریب کاری اور بدامنی پیدا کرنے کی اجازت ہی نہیں۔

انہوں نے زوردے کر کہاکہ لیڈروں اور تنظیموں کو نہیں چاہئے کہ وہ آگ پر تیل چھڑکیں مرکزی وزیر نے مزید کہاکہ امن و ضبط ریاست کا معاملہ ہے اور اسے برقرار رکھنے فسادیوں کے خلاف ریاست کو ممکنہ سخت کارروائی کرنا چاہئے۔

انہوں نے ادعا پیش کیا کہ ملک اور ریاستوں میں ماحول کو بگاڑنے کیلئے پر تشدد احتجاج اور دانستہ منصوبہ بندی کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ کورونا وباء کے دوران دیگر ملکوں کے بہ نسبت ہندوستان بہتر کارروائی کیا ہے۔

193 کروڑ ٹیکہ اندازی کا نشانہ پورا کیا گیا۔28 ماہ تک 80 کروڑ افراد کو مسلسل مفت راشن فراہم کیاگیا۔ آپریشن گنگا کے تحت یوکرین سے23 ہزار طلبہ کو ہندوستان واپس لایاگیا۔

معیشت کو مزید مستحکم کیاگیا اور ہندوستان جو دنیا کی تیزرفتار معیشت ہے کو 8.7 فیصدرفتار سے فروغ پارہی ہے۔ جی ایس ٹی کے تحت 1.5 لاکھ کروڑ کا نشانہ پورا کیاگیا۔ قبل ازیں انوراگ ٹھاکر نے کے ڈی سنگھ بابو اسٹیڈیم میں صفائی پروگرام میں حصہ لیا۔

تبصرہ کریں

Back to top button