جنگ کو روکنے کے لیے جلد یا بہ دیر مذاکرات شروع ہوں گے: یوکرین صدر زیلینسکی

یوکرین کے صدر نے ایک پیغام میں کہا کہ روس کو ہم سے بات کرنی ہوگی اور ہمیں بتانا ہوگا کہ جنگ کیسے ختم کی جائے لیکن جتنی جلدی بات چیت شروع ہوگی اتنا ہی کم نقصان ہوگا۔ پوری دنیا دور سے دیکھ رہی ہے کہ یوکرین میں کیا ہو رہا ہے۔

کیف: یوکرین کے خلاف جاری روسی کارروائی کے درمیان یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلینسکی نے جمعہ کو جنگ کے خاتمہ کے لیے بات چیت کا اشارہ دیتے ہوئے کہا کہ جلد یا بدیر، لیکن جنگ کو روکنے کے لیے مذاکرات شروع ہوں گے۔ یوکرین کے صدر نے ایک پیغام میں کہا کہ روس کو ہم سے بات کرنی ہوگی اور ہمیں بتانا ہوگا کہ جنگ کیسے ختم کی جائے لیکن جتنی جلدی بات چیت شروع ہوگی اتنا ہی کم نقصان ہوگا۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ پوری دنیا دور سے دیکھ رہی ہے کہ یوکرین میں کیا ہو رہا ہے اور انہوں نے واضح کیا کہ روس کے خلاف جو پابندیاں لگائی جا رہی ہیں وہ کافی نہیں ہیں۔ دریں اثنا یوکرائنی صدر نے بخارسٹ نائن گروپ پر روس کے خلاف فوجی امداد اور پابندیوں پر زور دیا ہے۔ زیلنسکی نے اپنی ٹوئٹ میں کہا کہ ہم اپنی آزادی اور اپنی سرزمین کا دفاع کریں گے لیکن اس کے لیے ہمیں دوسرے ممالک کی مدد درکار ہے۔

اس معاملے پر پولینڈ کے صدر کے ساتھ بات چیت کے بعد میں بخارسٹ نائن ممالک سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ ہمیں فوجی امداد دیں اور روس پر دباؤ ڈالنے کے لیے موثر پابندیاں لگائیں۔ ہم مل کر روس کو مذاکرات پر مجبور کر سکتے ہیں۔ ہمیں جنگ مخالف اتحاد کی ضرورت ہے۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button