جودھپور میں کرفیو میں 6 مئی تک توسیع

حکومت ِ راجستھان نے جودھپور کے 10 پولیس اسٹیشنوں کے حدود میں نافذ کرفیو میں 6 مئی کی نصف شب تک توسیع کردی ہے۔ مزید احکام تک انٹرنیٹ خدمات بھی معطل رہیں گی۔

جئے پور۔: حکومت ِ راجستھان نے جودھپور کے 10 پولیس اسٹیشنوں کے حدود میں نافذ کرفیو میں 6 مئی کی نصف شب تک توسیع کردی ہے۔ مزید احکام تک انٹرنیٹ خدمات بھی معطل رہیں گی۔

یہاں پیر کی رات دو فرقوں کے درمیان تشدد پھوٹ پڑا تھا۔ دریں اثنا صورتِ حال قابو میں ہے اور کل کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا۔ بہرحال احتیاطی اقدام کے طورپر کرفیو میں توسیع کی گئی ہے۔

ڈائرکٹر جنرل پولیس ایم ایل لاتھر نے یہ بات بتائی۔ انہوں نے کہا کہ سارے شہر میں کرفیو کے قواعد پر پوری طرح عمل کیا جارہا ہے۔ بہرحال جن طلبا کے امتحانات ہیں انہیں جانے کی اجازت دی جارہی ہے۔

اسی دوران کمشنریٹ کورٹ کل رات نصف شب تک کھلا رہا اور 60 افراد کو ضمانت منظور کی گئی۔ چہارشنبہ کو دونوں فرقوں کی ایک میٹنگ بھی طلب کی گئی تھی جس میں دونوں برادریوں نے امن و امان برقرار رکھنے سے اتفاق کیا۔

اس میٹنگ میں بی جے پی رکن اسمبلی سوریہ کانتا ویاس نے بے قصور افراد کی رہائی اور ملزمین کی گرفتاری کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے میٹنگ کا بائیکاٹ کیا اور دھرنا و برت رکھنے کا انتباہ دیا۔

بہرحال انتظامیہ کی جانب سے بے قصور افراد کی رہائی کا تیقن دیئے جانے کے بعد بی جے پی نے دھرنا اور برت کا پروگرام منسوخ کردیا جو جمعرات سے شروع ہونے والا تھا۔ علیحدہ اطلاع کے بموجب جودھپور میں فرقہ وارانہ تشدد کے سلسلہ میں تاحال 211 افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔

ڈی جی پی نے بتایا کہ 211 کے منجملہ 191کو دفعہ 151 اور 20 کے تحت گرفتار کیا گیا ہے۔ 19 ایف آئی آر بھی درج کی گئی ہیں جن میں 4 پولیس کی جانب سے اور دیگر 15 عام افراد کی جانب سے درج کرائی گئی ہیں۔ ڈی جی پی کے مطابق عوام سے امن و امان برقرار رکھنے‘ افواہوں پر یقین نہ کرنے اور افواہوں کے بارے میں مقامی پولیس عہدیداروں کو فوری اطلاع دینے کی اپیل کی گئی ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button