حکومت‘ سپریم کورٹ میں سماجی و معاشی سروے پیش کرے: سدا رامیا

سپریم کورٹ کی حالیہ رولنگ کے بعد او بی سی امیدوار ضلع پریشد، تعلقہ پریشد اور دیگر مجالس مقامی کے انتخابات میں تحفظات کے اہل نہیں رہیں گے تاوقتیکہ حکومت او بی سیز کی پسماندگی کا مطالعہ کرنے کمیشن نہ قائم کرے۔

بنگلورو: قائد اپوزیشن سدارامیا نے ریاستی حکومت سے اوبی سیز کے لیے تحفظات کے ساتھ ضلع پنچایت و تعلقہ پنچایت انتخابات منعقد کرنے ریاستی پسماندہ طبقات کمیشن کا سماجی، تعلیمی اور معاشی سروے استعمال کرنے کی درخواست کی۔

سپریم کورٹ کی حالیہ رولنگ کے بعد او بی سی امیدوار ضلع پریشد، تعلقہ پریشد اور دیگر مجالس مقامی کے انتخابات میں تحفظات کے اہل نہیں رہیں گے تاوقتیکہ حکومت او بی سیز کی پسماندگی کا مطالعہ کرنے کمیشن نہ قائم کرے۔

 انہوں نے کہا کہ ریاستی پسماندہ طبقات کمیشن کا سماجی، تعلیمی اور معاشی سروے اس مسئلہ کی یکسوئی میں مدد کرسکتا ہے۔ سپریم کورٹ ریاست کے وسیع پیمانے پر گھر گھر سروے کو قبول کرلے گی۔ یہ سروے اس وقت کرایا گیا تھا جب سدارامیا چیف منسٹر تھے مگر ریاستی حکومت نے ابھی تک اسے قبول نہیں کیا۔

انہوں نے کہا کہ اگرچیکہ سروے کے وقت سیاسی نمائندگی‘ کمیشن کے مینڈیٹ کا حصہ نہیں تھی،  مگر تمام ذاتوں کی عوامی نمائندگی کی تفصیلات حاصل کی گئیں اور اگر حکومت اس مسئلہ کو نمایاں کرتی ہے تو سپریم کورٹ اس مطالعہ پر غور کرسکتی ہے۔ حکومت کو وقت ضائع کیے بغیر سروے رپورٹ قبول کرکے عدالت میں پیش کرنا چاہیے۔“

ذریعہ
منصف ویب ڈیسک

تبصرہ کریں

Back to top button