حکومت نئے ایر انڈیا سی ای او الکر آئیجی کے تقرر کو منظوری نہ دے : آر ایس ایس

محمد الکر آئیجی کے تقرر کی مخالفت کے بارے میں پوچھے جانے پر اشونی مہاجن نے بتایا کہ یہ معاملہ قومی سلامتی سے متعلق ہے۔ آخر میں ایسے فیصلے متعلقہ شخص کے تعلقات کی بنیاد پر ہی تو کئے جاتے ہیں۔

نئی دہلی: آرایس ایس سے الحاق رکھنے والی تنظیم سودیشی جاگرن منچ نے آج مرکزی حکومت پر زور دیا کہ وہ ایر انڈیا کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر و منیجنگ ڈائرکٹر کے عہدہ پر ایک ترک شہری محمد الکرآئیجی کے تقرر کو قومی سلامتی کے پیش نظر منظوری نہ دے۔

سودیشی جاگرن منچ کے کو کنوینر اشونی مہاجن نے بتایا کہ حکومت اس معاملہ پر پہلے ہی حساس ہے اور اسے کافی سنجیدگی سے لے رہی ہے۔

ہمارا یہ احساس ہے کہ مرکزی حکومت محمد الکر آئیجی کے بحیثیت چیف ایگزیکٹیو آفیسر ایر انڈیا تقرر کو منظوری نہ دے۔

میں سمجھتا ہوں کہ حکومت پہلے ہی اس مسئلہ پر کافی حساس ہے اور امکان ہے کہ وہ محمد الکر آئیجی کے نام کو منظوری نہیں دے گی۔

محمد الکر آئیجی کے تقرر کی مخالفت کے بارے میں پوچھے جانے پر اشونی مہاجن نے بتایا کہ یہ معاملہ قومی سلامتی سے متعلق ہے۔ آخر میں ایسے فیصلے متعلقہ شخص کے تعلقات کی بنیاد پر ہی تو کئے جاتے ہیں۔

واضح رہے کہ ٹاٹا سنس نے 14 فروری کو ایر انڈیا کے سی ای او اور ایم ڈی کے طور پر ٹرکش ایرلائنس کے سابق چیرمین محمد الکر آئیجی کے تقرر کا اعلان کیا تھا۔ اس تقرر کا اعلان کرتے ہوئے بتایا گیا تھا کہ الکر آئیجی یکم اپریل کو یا اس سے پہلے اپنی ذمہ داریاں سنبھال لیں گے۔

تبصرہ کریں

Back to top button