حکومت کا مہنگائی اور بے روزگاری پر مباحث سے فرار: کانگریس

پارلیمنٹ کو جمعرات کے روزغیرمعینہ مدت کے لئے ملتوی کئے جانے کے ساتھ ہی کانگریس نے الزام عائد کیاکہ حکومت نے بجٹ سیشن کے دوران مہنگائی‘ کسانوں اور بے روزگاری کے مسائل سے راہ ِ فرار اختیار کی۔

نئی دہلی: پارلیمنٹ کو جمعرات کے روزغیرمعینہ مدت کے لئے ملتوی کئے جانے کے ساتھ ہی کانگریس نے الزام عائد کیاکہ حکومت نے بجٹ سیشن کے دوران مہنگائی‘ کسانوں اور بے روزگاری کے مسائل سے راہ ِ فرار اختیار کی۔

جئے رام رمیش نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ راجیہ سبھا کا اجلاس 2 دن پہلے ہی ملتوی کردیا گیا تھا جبکہ اپوزیشن ڈبلیو ایم ڈی اور انتارتیکا بلوں کو منظور کرنے کے لئے تیار تھی۔

اپنی سیاسی سہولت کے لحاظ سے مودی حکومت نے مہنگائی‘ کسانوں کے ساتھ کئے گئے ادھورے وعدوں پر مباحث سے راہ فرار اختیار کی۔

جمعرات کے روز پارلیمنٹ کے دونوں اجلاسوں کی کارروائی غیرمعینہ مدت کے لئے ملتوی کردی گئی۔ پارلیمنٹ کا بجٹ اجلاس مقررہ وقت سے ایک دن پہلے ہی ختم ہوگیا ہے۔

ایوان ِ زیریں کی کارروائی کے آغاز کے ساتھ ہی اسپیکر اوم برلا نے سیشن کی کارروائی کا خلاصہ پیش کرتے ہوئے وداعی حوالہ دیا۔ بعدازاں انہوں نے ایوان کو غیرمعینہ مدت کے لئے ملتوی کرنے کا اعلان کیا۔

17 ویں لوک سبھا کے آٹھویں اجلاس میں جملہ کام کی پیداوار129 فیصد رہی۔ اسپیکر اوم برلا نے سیشن میں کئے گئے کام کے بارے میں ارکان کو یہ بات بتائی۔ انہوں نے مزید کہا کہ سیشن کا آغاز 31 جنوری کو ہوا تھا اور 27 بیٹھکیں ہوئیں جن کا دورانیہ تقریباً 177گھنٹے اور 50 منٹ تھا۔

تبصرہ کریں

Back to top button