اجئے مشرا کی فوری برطرفی کا مطالبہ‘کانگریس وفد کی صدرسے ملاقات

راہول گاندھی نے مطالبہ کیا کہ سپریم کورٹ کے2 برسرخدمت جج تحقیقات کریں اور خاطیوں کو سزا ملے۔ انہوں نے کہا کہ مملکتی وزیر داخلہ کی برطرفی تک غیرجانبدارانہ تحقیقات اور انصاف ممکن نہیں۔

نئی دہلی: کانگریس قائدین کے وفد نے جس میں سابق صدر راہول گاندھی شامل تھے‘ چہارشنبہ کے دن صدرجمہوریہ سے ملاقات کی اور مملکتی وزیر داخلہ اجئے کمار مشرا کی فوری برطرفی کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے سپریم کورٹ کے 2 برسرخدمت ججس کے ذریعہ لکھیم پور واقعہ کی آزادانہ عدالتی تحقیقات کا مطالبہ کیا۔

 سینئر کانگریس قائدین کے وفد نے صدرجمہوریہ کو لکھیم پور واقعہ کی یادداشت حقائق بھی پیش کی۔ راہول گاندھی نے صدرجمہوریہ سے ملاقات کے بعد میڈیا سے کہا کہ انہوں نے صدرجمہوریہ کو بتادیا ہے کہ آزادانہ تحقیقات یقینی بنانے مملکتی وزیر داخلہ کا مستعفی ہونا ضروری ہے کیونکہ ان کا لڑکا آشیش مشرا اس معاملہ میں ملزم ہے۔

راہول گاندھی نے مطالبہ کیا کہ سپریم کورٹ کے2 برسرخدمت جج تحقیقات کریں اور خاطیوں کو سزا ملے۔ انہوں نے کہا کہ مملکتی وزیر داخلہ کی برطرفی تک غیرجانبدارانہ تحقیقات اور انصاف ممکن نہیں۔ کانگریس وفد میں اے کے انٹونی‘ غلام نبی آزاد‘ ملیکارجن کھڑگے اور پرینکا گاندھی وڈرا شامل تھے۔ یہ پوچھنے پر کہ آیا صدرجمہوریہ سے انہیں کوئی تیقن ملا ہے تو پرینکا گاندھی نے دعویٰ کیا کہ صدرجمہوریہ نے انہیں تیقن دیا ہے کہ وہ اس سلسلہ میں آج ہی حکومت سے بات کریں گے۔

صدر سے ملاقات کے بعد راہول گاندھی نے میڈیا کو بتایا کہ انہوں نے کسانوں کے لواحقین اور لکھیم پور کھیری واقعہ میں مارے گئے ایک صحافی کیلئے انصاف کا مطالبہ کیا ہے۔ گاندھی نے کہا ، ’ہم ان لوگوں کے خاندانوں سے ملے ہیں جو لکھیم پور کھیری میں کچلے گئے تھے۔ متاثرین انصاف کا مطالبہ کر رہے ہیں ، وہ مجرموں کو سزا دینے کا مطالبہ کر رہے ہیں‘۔

صدر سے ملاقات کے بعد پرینکا گاندھی نے ٹویٹر پر لکھا ،’لکھیم پور کھیری قتل عام کے واقعہ پر ، آج راہول گاندھی اور کانگریس کے سینئر رہنماؤں نے عزت مٓاب صدر رام ناتھ کووند سے ملاقات کرکے انصاف کی آواز بلند کی‘۔ انہوں نے کہا کہ صدر نے یقین دلایا ہے کہ وہ اس معاملہ میں حکومت سے بات کریں گے۔

غور طلب ہے کہ 3لکھیم پور کھیری میں اتر پردیش کےنائب چیف منسٹر کیشوا پرساد موریہ کی آمد کی مخالفت کرنے والے کسانوں کے ہجوم پر مبینہ طور پر مرکزی وزیر مملکت برائے داخلہ کے بیٹے آشیش مشرا کے تین اکتوبر کو گاڑی دوڑانے اور اس سے مشتعل تشدد میں کم از کم آٹھ افراد مارے گئے تھے۔ اس معاملے میں پولیس نے طویل پوچھ گچھ کے بعد آشیش مشرا کو گرفتار کیا ہے۔ کسان رہنما اور اپوزیشن پارٹیاں اجے مشرا کی برطرفی کا مطالبہ کر رہی ہیں۔

ذریعہ
پی ٹی آئی؍ یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.