ہندوستان ٹیکنالوجی کو اپنانے میں سب سے آگے:مودی

وزیراعظم نے بتایا کہ پچھلے سال ہندوستان میں پہلی بار، اے ٹی ایم سے نقد پیسے نکالنے کے مقابلے موبائل سے زیادہ ادائیگیاں کی گئیں۔

نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی نے ڈیجیٹل لین دین اور بینکنگ نظام سے اس میں آئی تبدیلیوں کا حوالے دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہندوستان نے دنیا کو دکھادیا ہے کہ وہ ٹیکنالوجی کو اپنانے میں سب سے آگے ہے۔

وزیراعظم نریندر مودی نے ویڈیو کانفرنس کے ذریعہ مالیاتی ٹکنالوجی کے قائدانہ فورم’ان فنیٹی فورم‘کا افتتاح کرتے ہوئے کہا کہ کرنسی کی تاریخ میں زبردست ارتقا دیکھنے کو ملا ہے۔

وزیراعظم نے بتایا کہ پچھلے سال ہندوستان میں پہلی بار، اے ٹی ایم سے نقد پیسے نکالنے کے مقابلے موبائل سے زیادہ ادائیگیاں کی گئیں۔مکمل طور پر ڈیجیٹل بینک جن کا کوئی فزیکل برانچ آفس نہیں ہے، پہلے ہی ایک حقیقت بن چکے ہیں اور ان میں سے کچھ بینک ایک دہائی سے بھی کم عرصہ میں عوامی مقام بنے ہیں۔

انہوں نے کہا ”جس طرح انسانوں کا ارتقا ہوا ہے اسی طرح سے ہماری لین دین کی شکلوں کا بھی ارتقا ہوا ہے۔ بارٹر سسٹم (ایک سامان کے بدلے دوسرے سامان کا لین دین) سے لے کر دھات تک، سکوں سے لے کر نوٹ تک، چیک سے لے کر کارڈ تک،آج ہم یہاں پہنچے ہیں۔“وزیراعظم مودی نے کہا کہ ہندوستان نے دنیا کو یہ ثابت کردیا ہے کہ ٹکنالوجی یا اس سے متعلق اختراعات کو اپنانے کے معاملے میں ہم کسی سے کم نہیں ہیں۔

ڈیجیٹل انڈیا کے تحت تبدیلی لانے سے متعلق کی گئی پہل نے اختراعی فن ٹیک جیسے حل کے لئے دروازے کھولے ہیں جن کا اطلاق گورننس میں کیا جائے گا۔ وزیراعظم نے اس بات پر زور دیا کہ اب ان فن ٹیک پہل کو فن ٹیک انقلاب میں تبدیل کرنے کا وقت آگیا ہے۔انہوں نے مزیدکہاکہ،”ایک ایسا انقلاب جو ملک کے ہر ایک شہری کو مالی طور پر بااختیار بنانے کے مقصد کو حاصل کرنے میں مدد کرے گا۔“

اس بات کی وضاحت کرتے ہوئے کہ کیسے ٹکنالوجی نے مالیاتی شمولیت کو یقینی بنایا ہے، وزیراعظم مودی نے کہا کہ2014میں صرف50فیصد ہندوستانیوں کے پاس بینک اکاؤنٹ تھے، لیکن گزشتہ سات سال کے دوران ہندوستان نے430ملین جن دھن کھاتے کھول کر اسے ہر ایک تک پہنچایا ہے۔

اس سلسلے میں انہوں نے کئی مثالیں پیش کیں جیسے کہ690 ملین’روپے‘ کارڈس سے پچھلے سال1.3بلین کی لین دین ہوئی۔ صرف پچھلے ایک مہینے میں یو پی آئی پراسیسنگ سے تقریباً 4.2 بلین کی لین دین کی گئی؛ ہر مہینے جی ایس ٹی پورٹل پر تقریباً300ملین انوائسز اپ لوڈ کئے جاتے ہیں؛ وبائی مرض کے باوجود روزانہ1.5بلین ریلوے ٹکٹ بک کئے جاتے ہیں؛ پچھلے سال فاسٹ ٹیگ کے ذریعہ 1.3بلین کی لین دین ہوئی؛ پی ایم سوانیدھی نے ملک بھر کے چھوٹے کارو باریوں کو پیسے لینے کے لئے رسائی فراہم کی؛ ’ای- روپی‘ نے لیکج کے بغیر مخصوص خدمات کی باہدف ڈیلیوری کو ممکن بنایا۔

وزیراعظم نے کہا کہ مالیاتی شمولیت فن ٹیک انقلاب کی محرک ہے۔ اس کی مزید وضاحت کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ مالیاتی ٹکنالوجی چار ستنوں پر قائم ہے: آمدنی، سرمایہ کاری، بیمہ اور ادارہ جاتی کریڈٹ۔ وزیراعظم نے اس کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ ”جب آمدنی بڑھتی ہے تو سرمایہ کاری ممکن ہوجاتی ہے۔

ذریعہ
یو این آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.