چینائی ایرپورٹ پر مہنگے پی سی آرٹسٹ سے مسافرین پریشان

ساؤتھ انڈین ٹراویل ایجنٹس اسوسی ایشن کے جنرل سکریٹری وینوگوپال کرشن نے کہا کہ حکومت ٹاملناڈو کو فوری مداخلت کرنی چاہئیے۔ ٹسٹ چارجس گھٹانے کی ضرورت ہے۔

چینائی: چینائی ایرپورٹ پر بین الاقوامی مسافرین کو لازمی ریاپڈ پی سی آر ٹسٹ اور اس کی بھاری فیس کی وجہ سے بڑی مشکل کا سامنا ہے۔ حکومت ہند کی کمپنی ہندولیابس جو ’منی رتنا‘ ہے فی مسافر3400 روپئے لے رہی ہے اور رپورٹ کئی گھنٹے بعد دے رہی ہے۔  ایک ٹریول ایجنٹ اور دوبئی کا اکثرسفرکرنے والے سرجیت شیوانند نے آئی اے این ایس سے کہا کہ اس کے جیسے لوگوں کے لئے جو کام کے سلسلہ میں دوبئی جاتے آتے رہتے ہیں مسئلہ نہیں ہے لیکن اس نے کئی مزدوروں کو جن کی تنخواہ معمولی ہوتی ہے پیسوں کا انتظام کرنے دھکے کھاتے دیکھاہے۔

اس کے علاوہ کئی مسافرین کو ریاپڈ پی سی آرٹسٹ کا پتہ ہی نہیں۔ ایرپورٹ پہنچنے پر انہیں اس کی جانکاری ملتی ہے۔ کنسٹرکشن ورکر شاہجہاں کو جو پہلی مرتبہ دبئی جارہا ہے چینائی ایرپورٹ پر بڑی پریشانی ہوئی۔ اس نے کہا کہ یہ میرے لئے اچھا دن نہیں۔ ایرپورٹ پہنچنے کے بعد مجھے ٹسٹ کا پتہ چلا۔ میرے پاس پیسہ نہیں تھا۔ خوش قسمتی سے میں روانگی سے 7گھنٹے پہلے ایرپورٹ پہنچا تھا میں نے اپنے گاؤں سے پیسہ منگوالیا۔

ساؤتھ انڈین ٹراویل ایجنٹس اسوسی ایشن کے جنرل سکریٹری وینوگوپال کرشن نے آئی اے این ایس سے کہا کہ حکومت ٹاملناڈو کو فوری مداخلت کرنی چاہئیے۔ ٹسٹ چارجس گھٹانے کی ضرورت ہے۔ متحدہ عرب امارات جانے والے تمام مسافرین کو پیشگی جانکاری دی جانی چاہئیے کہ ایرپورٹ پر ریاپڈ پی سی آر ٹسٹ ہوگا اور اس کیلئے انہیں اتنی فیس دینی ہوگی تاکہ وہ تیاری کے ساتھ ایرپورٹ پہنچیں۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.