لوک سبھا میں سی اے اے واپس لینے کے مطالبہ کی گونج

دانش علی نے پیر کو لوک سبھا میں وقفہ صفر کے دوران حکومت سے سی اے اے قانون کو واپس لینے کا مطالبہ کیا۔ اس کے خلاف احتجاج کے دوران یو اے پی اے نافذ کرتے ہوئےانہیں جیلوں میں بند طلباء اور مظاہرین کی جلد از جلد رہا کرنے کا مطالبہ کیا۔

نئی دہلی: بہوجن سماج پارٹی کے رہنما کنور دانش علی نے حکومت سے شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) کو واپس لینے کا مطالبہ کیا اور کہا ہے کہ اس قانون کے خلاف احتجاج کرنے والے جیلوں میں بند طلباء کو جلد از جلد رہا کیا جانا چاہئے.

دانش علی نے پیر کو لوک سبھا میں وقفہ صفر کے دوران حکومت سے سی اے اے قانون کو واپس لینے کا مطالبہ کیا۔ اس کے خلاف احتجاج کے دوران یو اے پی اے نافذ کرتے ہوئےانہیں جیلوں میں بند طلباء اور مظاہرین کی جلد از جلد رہا کرنے کا مطالبہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ ماضی میں حکومت نے کسانوں کے خلاف تین سیاہ زرعی قوانین کو واپس لے لیا ہے اور حکومت نے پورے ملک میں پرامن احتجاج کرنے والے لوگوں کے خلاف جھوٹے مقدمات واپس لینے کی تحریری یقین دہانی کرائی ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کی طرف سے لائے گئے سی اے اے کے قانون کے خلاف پورے ملک میں پرامن احتجاج کیا گیا ہے۔ جامعہ ملیہ اسلامیہ سے لے کر جواہر لعل نہرو یونیورسٹی تک اور بالخصوص شاہین باغ میں ان بزرگ خواتین نے پرامن تحریک چلائی۔

ان لوگوں کو دوبارہ احتجاج کے لیے سڑکوں پر آنے پر مجبور نہ کریں۔ انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ وہ اس قانون کو بھی واپس لے اور لوگوں بالخصوص طلباء کو جو جھوٹے مقدمات میں جیلوں میں ہیں انہیں جلد از جلد رہا کرے۔

ذریعہ
یو این آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.