اومیکرون کا پھیلاؤ: مرکز کے احکام کو سختی سے نافذ کرنے ہائیکورٹ کا حکم

چیف جسٹس نے عوام کی جانب سے ماسک کے عدم استعمال پر تشویش کا اظہار کیا۔ درخواست گذار نے کہا کہ بہت کم احتیاطی اقدامات کو روبعمل لارہے ہیں۔ انہوں نے ریاست کی سرحدوں پر خصوصی میکا نزم وضع کرنے کی خواہش کی۔

حیدرآباد: تلنگانہ ہائیکورٹ نے ریاستی حکومت کو کورونا وائرس کے نئے ویرینٹ اومیکرون کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے مرکزی حکومت کی جانب سے جاری کردہ تازہ احکام پر سختی کے ساتھ عمل آوری کا حکم دیا ہے اور اس سلسلہ  میں اندرون 2یوم احکام کی اجرائی کی ہدایت دی ہے۔

 چیف جسٹس ستیش چندر شرما اور جسٹس این تکا رام جی پر مشتمل ڈیویژن بنچ نے آج سینئر وکیل ایل روی چندر کی جانب سے داخل کردہ عرضی پر سماعت کرتے ہوئے حکومت کو اومیکرون کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے مرکز کے تازہ احکام کو سختی کے ساتھ روبعمل لانے کی ہدایت دی ہے۔

 سینئر وکیل روی چندر نے اپنی عرضی میں عدالت العالیہ سے آنے والے تہواروں کرسمس، سال نو اور سنکرانتی میں عوامی اجتماعات کو روکنے اور وائرس کے نئے ویرینٹ کے پھیلنے سے روکنے کیلئے ممکنہ اقدامات کرنے کی حکومت کو ہدایات جاری کرنے کی اپیل کی تھی۔

 چیف جسٹس نے عوام کی جانب سے ماسک کے عدم استعمال پر تشویش کا اظہار کیا۔ درخواست گذار نے کہا کہ بہت کم احتیاطی اقدامات کو روبعمل لارہے ہیں۔ انہوں نے ریاست کی سرحدوں پر خصوصی میکا نزم وضع کرنے کی خواہش کی۔

عدالت العالیہ نے ریاستی حکومت کو ایر پورٹ کی طرح سرحدوں پر بھی سہولتیں فراہم کرنے کی ہدایت دی اور کہا کہ اگر ضرورت پڑنے پر کورنٹائن کی سہولتیں فراہم کی جانی چاہئے۔ ڈیویژن بنچ نے نئے ویرینٹ کی بین ریاستی منتقلی کو روکنے کیلئے ممکنہ اقدامات کرنا چاہئے۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.