بیرون ممالک سے آنے والے عمرہ زائرین کو 30 دن تک قیام کی اجازت

عکاظ اخبار کے مطابق وزارت حج و عمرہ نے بیان میں کہا کہ وزارت صحت کے مقرر کردہ ضوابط کے مطابق عمرہ زائر کی عمر 18 برس اور اس سے زیادہ ہو وہی عمرہ پر آسکیں گے۔بیان میں کہا گیا کہ 18سال سے کم عمر کے افراد کو عمرہ پر آنے کی اجازت نہیں ہے۔

ریاض: سعودی عرب میں وزارت حج و عمرہ نے کہا ہے کہ بیرون مملکت سے آنے والے عمرہ زائرین سعودی عرب میں 30 روز تک قیام کر سکتے ہیں، جو عمرہ ویزہ کی میعاد ہے۔

عکاظ اخبار کے مطابق وزارت حج و عمرہ نے بیان میں کہا کہ وزارت صحت کے مقرر کردہ ضوابط کے مطابق عمرہ زائر کی عمر 18 برس اور اس سے زیادہ ہو وہی عمرہ پر آسکیں گے۔بیان میں کہا گیا کہ 18سال سے کم عمر کے افراد کو عمرہ پر آنے کی اجازت نہیں ہے۔

وزارت حج و عمرہ نے بتایا کہ جن ممالک سے عمرہ پر آنے کی اجازت دی گئی ہے وہاں سے آنے والے عمرہ زائرین کے لیے ضروری ہو گا کہ وہ مملکت میں منظور شدہ ویکسین کی دونوں خوراکیں لیے ہوئے ہوں۔بیان میں مزید لکھا تھا کہ جو لوگ دونوں خوراکیں لیے ہوئے ہوں گے انہیں براہِ راست عمرہ کرنے کی اجازت ہوگی۔

مملکت پہنچنے پر انہیں ہوٹل قرنطینہ کی پابندی نہیں کرنی ہو گی۔ سعودی عرب نے کورونا وائرس کی وجہ سے پہلی بار مارچ 2020 میں پابندیاں عائد کی تھیں تاہم اب بتدریج تمام پابندیاں ختم کی جارہی ہیں۔ سعودی حکام نے معتمرین کیلئے ایک اور آسانی کردی ہے اور وہ یہ کہ عمرہ پر جانے والے افراد اب 10 دن کے بجائے پورے 30 دن قیام کرسکیں گے۔

یکم نومبر 2020 کو جب سعودی عرب نے عمرہ کی اجازت دی تو اس وقت معتمرین کو صرف 10 یوم قیام کی اجازت تھی جسے اب 30 دن کردیا گیا ہے اور اس کا اطلاق فوری طور پر ہوگا۔گزشتہ دنوں سعودی حکام نے اعلان کیا تھا کہ اب عمرہ کیلئے آنے والے افراد کو کوئی قرنطینہ نہیں کرنا پڑے گا۔

تاہم ضروری ہے کہ انہوں نے سعودی عرب میں منظور کیے جانے والے کورونا ویکسین کی کم سے کم دو ڈوز لگوا لیے ہوں۔سعودی عرب نے صرف 4 ویکسینز کے استعمال کی منظوری دی ہے جن میں موڈرنا‘ فائزر بائیو این ٹیک، جانسن اینڈ جانسن اور آکسفورڈ کی ایسٹرازینیکا شامل ہیں۔

ذریعہ
ایجنسیز

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.