دنیا بھر میں ہر ساتواں نوجوان ذہنی عارضہ کا شکار: یونیسیف

یونیسیف نے کہا ہے کہ ذہنی صحت کے حوالے سے معاشرہ میں پائی جانے والی خاموشی کو توڑنا ، غلط فہمیوں اور مفروضے کو دور کرنا ، ذہنی صحت کی خواندگی کو بہتر بنانا اور بچوں ، نوعمروں اور نوجوانوں کے جذبات کو سمجھنا ضروری ہے۔

اقوام متحدہ۔5اکتوبر (ایجنسیز) اقوام متحدہ کے بہبود اطفال کے ادارے یونیسیف کے مطابق دنیا بھر میں دس سے 19 برس تک کی عمر کا ہر ساتواں نوجوان کسی نہ کسی ذہنی عارضے کا شکار ہے۔ اس عمر کے نوجوانوں میں پائے جانے والے نفسیاتی مسائل میں ڈپریشن، خوف اور ذہنی بے چینی نمایاں ہیں۔ یونیسیف نے اس حوالے سے کورونا کے وبائی مرض کے باعث لگائی گئی پابندیوں کے سنگین نفسیاتی اثرات سے بھی خبردار کیا ہے۔

اس عالمی ادارے نے یہ بھی کہا ہے کہ ایسے نوجوانوں کی مدد کے لیے سہولیات اور ان کے ذہنی مسائل کے علاج کے لیے دستیاب فنڈز کی بہت کمی ہے۔سروے کے مطابق 21 ممالک کے نوجوانوں کا خیال ہے کہ ذہنی صحت کے مسائل پر دوسروں سے مدد لینے سے بہتر ہے کہ اس مسئلے سے خود نمٹنے کی کوشش کی جائے۔

 تاہم ، ہندوستان میں 41 فیصد نوجوانوں کا خیال ہے کہ ذہنی صحت کے لیے نوجوانوں کے لیے مشورہ یا مدد لینا ایک بہتر آپشن ہے۔ دوسری طرف ہندوستان میں 47 فیصد لوگوں کا خیال ہے کہ ذہنی صحت ایک انفرادی مسئلہ ہے ، اسے دوسروں سے مدد لیے بغیر بہتر بنایا جا سکتا ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ کورونا وبا کے دوران لاک ڈاؤن نے لوگوں کی ذہنی صحت اور خوشی کو متاثر کیا ہے۔ اسکولوں کی بندش ، وائرس کی دوسری لہر کے تکلیف دہ اثرات اور اپنے پیاروں کو کھونے کے غم نے بچوں کو پہلے سے زیادہ تنہا کردیا ہے۔

یونیسیف نے کہا ہے کہ ذہنی صحت کے حوالے سے معاشرہ میں پائی جانے والی خاموشی کو توڑنا ، غلط فہمیوں اور مفروضے کو دور کرنا ، ذہنی صحت کی خواندگی کو بہتر بنانا اور بچوں ، نوعمروں اور نوجوانوں کے جذبات کو سمجھنا ضروری ہے۔ رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا کہ کووڈ۔ 19 سے پہلے بھی نوجوان اور بچے ذہنی صحت کے مسائل سے دوچار تھے۔ وبائی مرض نے بچوں ، نوعمروں ، نوجوانوں ، والدین اور دیکھ بھال کرنے والوں کی پوری نسل کی ذہنی صحت کے لیے بڑی تشویش پیدا کی ہے۔

رپورٹ میں ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ ہندوستان میں ذہنی صحت کے مسائل سے اندازہ لگایا جاتا ہے کہ سال 2012-2030 میں 1000 ارب ڈالر سے زیادہ کا معاشی نقصان ہونے کا اندازہ ہے ۔ ہندوستان میں کل سالانہ صحت بجٹ کا صرف 0.05 فیصد ذہنی صحت پر خرچ کیا گیا۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.