رانچی تشدد‘ پولیس نے ملزمین کے پوسٹرس ہٹادیئے

پولیس نے تقریباً 30 افراد کی تصاویر والے پوسٹرس لگائے تھے۔ جھارکھنڈ پولیس کے ترجمان نے پی ٹی آئی سے کہا کہ فنی نقص دور کرنے کے بعد پوسٹرس دوبارہ لگائے جائیں گے۔

رانچی: جھارکھنڈ کے دارالحکومت رانچی میں حالیہ پرتشدد احتجاج میں مبینہ ملوث افراد کی تصاویر والے پوسٹرس لگانے کے چند گھنٹے بعد جھارکھنڈ پولیس نے فنی نقص کے حوالہ سے انہیں ہٹالیا۔ برسراقتدار جھارکھنڈ مکتی مورچہ (جے ایم ایم) نے پولیس کے اس اقدام کی مخالفت کی ہے جبکہ پولیس کا کہنا ہے کہ غلطیوں کی اصلاح کرکے پوسٹرس دوبارہ لگائے جائیں گے۔

 پولیس نے تقریباً 30  افراد کی تصاویر والے پوسٹرس لگائے تھے۔ جھارکھنڈ پولیس کے ترجمان نے پی ٹی آئی سے کہا کہ فنی نقص دور کرنے کے بعد پوسٹرس دوبارہ لگائے جائیں گے۔ تشدد میں ملوث 30  افراد کی شناخت کی کوشش جاری ہے۔

 اسی دوران جے ایم ایم نے پوسٹرس لگانے پر سخت اعتراض کیا اور کہا کہ پولیس کے پاس پہلے سے کافی جانکاری موجود ہے۔ پوسٹرس لگانے سے مزید بے چینی بڑھے گی۔

تبصرہ کریں

Back to top button