روس اور یوکرین کو ہنگری کے دارالحکومت میں امن بات چیت کی پیشکش

ہنگری کے وزیر خارجہ و تجارت پیٹر زچارتو نے کہا کہ میں نے فون پر فریقین سے بات چیت کی اور کسی نے بھی میری تجویز کو مسترد نہیں کیا ہے۔ بڈھاپسٹ‘ روس اور یوکرین دونوں کے مذاکراتی وفود کے لئے محفوظ مقام کے طورپر کام آسکتا ہے۔

بڈھاپسٹ: ہنگری کے وزیر خارجہ و تجارت پیٹر زچارتو نے پیشکش کی ہے کہ روس اور یوکرین کے درمیان امن کی بات چیت ہنگری کے دارالحکومت بڈھاپسٹ میں ہوسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ امن بات چیت کے امکانی مقام منسک‘ وارسا پر اختلاف برقرار ہے۔ میں نے روسی وزیر خارجہ لاروف اور یوکرینی صدر زیلنسکی کی کابینہ کے سربراہ یرمک سے سفارش کی ہے کہ بات چیت بڈھاپسٹ میں کی جائے۔

 انہوں نے کہا کہ میں نے فون پر فریقین سے بات چیت کی اور کسی نے بھی میری تجویز کو مسترد نہیں کیا ہے۔ بڈھاپسٹ‘ روس اور یوکرین دونوں کے مذاکراتی وفود کے لئے محفوظ مقام کے طورپر کام آسکتا ہے۔ بات چیت جتنی جلدی شروع ہوجائے اتنی جلدی امن قائم ہوجائے گا اور جنگ کی وجہ سے کم سے کم لوگ مریں گے۔ یوکرینی صدر زیلنسکی قبل ازیں کہہ چکے ہیں کہ فوجی حملہ میں کم ازکم 137 یوکرینی ہلاک اور 300 سے زائد زخمی ہوئے ہیں۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button