روہنگیا مسلمانوں کی مدد کا الزام، 6 افراد گرفتار: این آئی اے

نیشنل انوسٹیگیشن ایجنسی (این آئی اے نے 6 افراد کو گرفتار کرکے انسانی اسمگلنگ کے ایک کیس کا انکشاف کیا جس میں روہنگیا مسلمانوں کو ہندوستان میں داخل کرکے جعلی دستاویزات کی بنیاد پر انہیں یہاں بسا رہے تھے۔

نئی دہلی: نیشنل انوسٹیگیشن ایجنسی (این آئی اے) نے 6 افراد کو گرفتار کرکے انسانی اسمگلنگ کے ایک کیس کا انکشاف کیا جس میں روہنگیا مسلمانوں کو ہندوستان میں داخل کرکے جعلی دستاویزات کی بنیاد پر انہیں یہاں بسا رہے تھے۔

این آئی اے نے آسام، میگھالیہ اور کرناٹک کے کئی مقامات پر تلاشی کارروائیاں بھی کیں۔

ملزمین کی شناخت قم قم احمد چودھری عرف کے کے احمد چودھری، عاشق احمد، ٹولی سربراہ سلام لشکر، احیاء احمد، باپن احمد چودھری اور جمال الدین احمد چودھری کی حیثیت سے کی گئی۔

این آئی اے کے ایک سینئر عہدیدار نے جمعہ کے دن بتایا کہ روہنگیا مسلمانوں کی غیرقانونی اسمگلنگ سے کیس کا تعلق ہے۔

گزشتہ دسمبر میں این آئی اے تعزیراتِ ہند کی دفعات 370 اور 376 (اے) کے تحت کیس درج کیا تھا۔

این آئی اے نے بتایا کہ اس ریاکٹ کا اصل منصوبہ ساز چودھری بنگلور سے یہ ریاکٹ چلا رہا تھا۔ ریاکٹ کے دیگر سرگرم ارکان ملک کے مختلف حصوں میں پھیلے ہوئے ہیں۔

این آئی اے کے عہدیدار نے بتایاکہ آج تلاشیوں کے دوران بڑی تعداد میں قابل اعتراض دستاویزات، ساز و سامان اور ڈیجیٹل مواد ضبط کیا گیا اور کہا کہ مزید تحقیقات جاری ہیں۔

تبصرہ کریں

Back to top button